.

کرونا کے دوران تونس کو سب سے زیادہ امداد سعودی عرب نے فراہم کی: سعودی سفیر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تونس میں سعودی عرب کے سفیر عبد العزیز بن علی الصقر نے بدھ کے روز العربیہ سے گفتگو کرتے ہوئے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ سعودی عرب کی کرونا کے عرصے میں تونس کو سب سے زیادہ امداد فراہم کی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اس امداد کا مقصد تونس کے عوام کو وبا کا مقابلہ کرنے میں مدد فراہم کرنا تھا۔

انہوں نے نشاندہی کی کہ تونس کو سعودی امداد میں جدید طبی آلات شامل ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ سعودی امداد وبا کی لہر کو توڑنے میں نمایاں اثر ڈالے گی۔

خادم الحرمین الشریفین نے وبا کا مقابلہ کرنے کے لیے تونس کو فوری امداد فراہم کرنے کی ہدایت کی جس کے بعد ہوائی جہازوں کے ذریعے برادر مسلمان ملک کو طبی آلات اور ادویات فراہم کی گئیں تاکہ تونسی عوام موجودہ بحران کا مقابلہ کرنے کے قابل ہوسکیں۔

ان کا کہنا تھا کہ الریاض کے شاہ خالد بین الاقوامی ہوائی اڈے سےکل بدھ کو دو طیارے طبی امدادی سامان لے کر تونس روانہ ہوئے۔ امدادی سامان میں طبی سامان ،مریضوں کے انتہائی نگہداشت کا سامان، ادویات اور دیگر طبی آلات شامل ہیں۔

شاہ سلمان کی ہدایت میں تونس کی حکومت کو اینٹی کرونا ویکسین کی ایک ملین خوراکیں بھی فراہم کی گئی ہیں۔

تونس کرونا وائرس کے پھیلنے کی وجہ سے صحت کی ایک انتہائی مشکل صورتحال سے دوچار ہے۔ ایسے میں تونس کا صحت کا نظام اس وبا کا سامنا کرنے سے قاصر ہے خاص طور پر وائرس کے نئے پھیلاؤ اور متاثرین کی تعداد میں ریکارڈ اضافے کے بعد ملک شدید مشکلات دوچار ہے۔