.

ترکی کے بحری جہاز کی قبرص کے ساحلی سیکورٹی دستے پر فائرنگ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

قبرص کی سرکاری خبر رساں ایجنسی کے مطابق آج جمعے کو صبح سویرے ترکی کے ایک بحری جہاز نے قبرص کے ساحلوں پر گشت کے لیے مامور سیکورٹی دستے پر فائرنگ کر دی۔

ایجنسی نے پولیس کے حوالے سے بتایا ہے کہ سمندری پولیس کے 3 اہل کار ایک کشتی میں سوار ہو کر ترکی سے آنے والے غیر قانونی مہاجرین کی تفتیش کے لیے معمول کا گشت کر رہے تھے۔ اس دوران میں قبرص میں پائرگوس کی بندرگاہ سے 11 سمندری میل کی دوری پر یہ واقعہ پیش آیا۔

دو ماہ سے ترکی کا یہ کہنا ہے کہ وہ قبرص کے ساتھ متنازع علاقے میں گیس کی تلاش کے لیے نئے کنوئیں کھودے گا۔ مزید یہ کہ اب تک بحیرہ روم کے مشرق میں 8 کنوئیں کھو دے جا چکے ہیں تاہم ان سے گیس دریافت نہیں ہوئی۔

گذشتہ برس انقرہ حکومت نے توانائی کے وسائل دریافت کرنے کے لیے بحیرہ روم کے مشرق میں کئی بحری جہاز بھیجے تھے۔ اس کے نتیجے میں ترکی اور یونان کے درمیان تونائی کے وسائل کے حوالے سے اختلاف پیدا ہو گیا۔