.

حج کے موقع پرسعودی حکومت نے قابل ستائش اقدامات کیے: ڈبلیو ایچ او

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عالمی ادارہ صحت ( ڈبلیو ایچ او) کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر تیدروس ادھانوم غیبریوسس نے اس مرتبہ حج کے دوران میں کروناوائرس کو پھیلنے سے روکنے کےلیےاحتیاطی تدابیر پر عمل درآمد کے لیے سعودی عرب کے اقدامات کی ستائش کی ہے۔

عالمی ادارہ صحت کے ڈائریکٹر نے اپنے ٹویٹ میں کہا کہ ’’ایک ایسے موقع پر جب مسلمان حج کے لیے جمع ہیں، ہم کرونا وبا کے ماحول میں حجاج کی سلامتی یقینی بنانے کے لیے سعودی عرب کے اقدامات اور صحت عامہ کی منصوبہ بندی کا خیر مقدم کرتے ہیں۔‘‘

انھوں نے ایک اور ٹویٹ میں دنیا بھر کےمسلمانوں کو عیدالاضحیٰ کی مبارک باد دی ہے۔

یاد رہے کہ عالمی ادارہ صحت نے گذشتہ برس بھی حج کو محدود رکھنے سے متعلق سعودی عرب کے فیصلے کی حمایت کی تھی۔عالمی ادارہ صحت کا کہنا تھا کہ’’حج سے متعلق سعودی عرب کا فیصلہ خوش آیند ہے۔ محدود حج کی بدولت کرونا وائرس کے خطرات پرقابو پایاجاسکے گا۔‘‘

سعودی حکومت نے اس مرتبہ بھی کرونا وائرس کی وبا کے پیش نظر صرف اپنےشہریوں اورمملکت میں مقیم تارکِ وطن مکینوں کوحج کی اجازت دی ہے۔ان میں سے طے شدہ معیارپر پورااُترنے والے 60 ہزار خوش نصیبوں کا انتخاب کیا گیا تھا۔انھوں نے حج کے بیشتر مناسک مکمل کرلیے ہیں۔اس دوران میں کسی حاجی کے کرونا وائرس کا شکار ہونے کا کوئی کیس سامنے نہیں آیا ہے۔

سعودی حکومت نے 2020ء میں کرونا وائرس کی وبا کے پیش نظر صرف 10 ہزار شہریوں اورمکینوں کو فریضہ حج ادا کرنے کی اجازت دی تھی۔