افغان فورسز کا اولین مشن طالبان کا زور توڑنا ہے: پینٹاگان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکی وزیر دفاع لائیڈ آسٹن کا کہنا ہے کہ افغان سیکورٹی فورسز کا پہلا مشن طالبان تحریک کی جانب سے ملک کی اراضی کا کنٹرول واپس حاصل کرنے کی کوشش سے قبل طالبان کے زور حرکت کی قوت کو آہستہ کرنا ہے۔ آسٹن نے یہ بات ہفتے کے روز امریکی ریاست الاسکا کے دورے کے دوران میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔

روئٹرز نیوز ایجنسی کے مطابق افغان فوج طالبان کے خلاف جنگی حکمت عملی کا اصلاح کر رہی ہے۔ اس کا مقصد زیادہ اہمیت کے حامل علاقوں کے گرد فورسز کی پوزیشن مضبوط بنانا ہے۔ ان علاقوں میں دارالحکومت کابل اور دیگر شہروں کے علاوہ سرحدی گزر گاہیں اور اہم بنیادی ڈھانچے شامل ہیں۔

امریکی وزیر دفاع نے مزید کہا کہ "جہاں تک اس بات کا تعلق ہے کہ یہ فورسز طالبان کو روکیں گی یا نہیں ،،، میں سمجھتا ہوں کہ پہلی چیز یہ کرنا چاہیے کہ اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ وہ (طالبان کے) زور حرکت کو سست بنائیں"۔

آسٹن کے مطابق افغان سیکورٹی فورسز پیش قدمی کی صلاحیت اور قدرت رکھتی ہیں تاہم دیکھا جائے گا کہ آگے کیا ہوتا ہے۔

واضح رہے کہ امریکی فوج 31 اگست تک افغانستان میں اپنا مشن ختم کرنے کی تیاری میں مصروف ہے۔ یہ مکمل انخلا صدر جو بائیڈن کے احکامات پر عمل میں آ رہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں