.

دہشت گردی کے لیے سرمایہ اور سکیورٹی اہلکاروں کے قاتل کو سزائے موت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی وزارت داخلہ نے کہا ہے کہ ’سنگین جرائم پر سعودی شہری کو منگل کو مشرقی ریجن کے شہر دمام میں سزائے موت دی گئی ہے‘۔

وزارت داخلہ نے بیان میں کہا کہ ’سعودی شہری احمد بن سعید بن علی الجنبی نے ریاستی حکام کے خلاف مسلح بغاوت سمیت متعدد جرائم کا ارتکاب کیا تھا‘۔’قطیف کے علاقے میں مختلف مقامات پر سیکیورٹی گشتی فورس اور چیک پوسٹوں پر کئی بار سکیورٹی اہلکاروں پر فائرنگ کی کوشش کی۔ بدامنی پھیلانے میں جرائم پیشہ عناصر کی سرگرمیوں میں حصہ لیا تھا‘۔

بیان میں کہا گیا کہ ’سکیورٹی اہلکاروں پر حملوں، دہشت گردی کی فنڈنگ جیسے کام کیے تھے جبکہ بیرون مملکت سے اسلحہ سمگل کرنے، چھپانے اور منتقل کرنے کی کارروائیوں میں ملوث رہا‘۔ وزارت داخلہ کا کہنا ہے کہ’ احمد الجنبی کو گرفتار کرکے پوچھ گچھ کی گئی۔ فرد جرم عائد کرکے اسے سپیشلسٹ فوجداری عدالت کے حوالے کیا گیا‘۔

فوجداری عدالت نے احمد الجنبی پر الزامات ثابت ہونے، ملکی نظام سے بغاوت، ولی الامر کے خلاف بغاوت، ملک میں انارکی پھیلانے جیسے جرائم پر موت کی سزا سنا دی تھی۔ خصوصی فوجداری اپیل کورٹ اور پھر سپریم کورٹ نے فیصلے کی توثیق کر دی تھی۔ ایوان شاہی سے عدالتی فیصلے پر عمل درآمد کا فرمان بھی جاری ہوگیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں