.
کرونا وائرس

یو اے ای:پاکستان،بھارت سمیت بعض ممالک سے ٹرانزٹ مسافروں کے داخلے پرپابندی ختم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات نے پانچ اگست سے پاکستان ، بھارت ،نائیجیریا اور بعض دوسرے ممالک سے ٹرانزٹ پروازوں کے ذریعے آنے والے مسافروں کے ملک میں داخلے پرعاید پابندی ختم کرنے کا اعلان کیا ہے۔

یواے ای نے چند ماہ قبل کرونا وائرس کی وبا کے پیش نظر جنوبی ایشیا اور افریقا کے بعض ممالک سے آنے والے مسافروں کے ملک میں داخلے پر پابندی عاید کردی تھی۔

یواے ای کی قومی ایمرجنسی اور کرائسیس مینجمنٹ اتھارٹی (این سیما) نے منگل کے روز ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ ’’جن ممالک کی پروازوں کو معطل کیا گیا ہے،وہاں کے مسافراپنے ہوائی اڈوں سے ٹرانزٹ پروازوں کے ذریعے جمعرات سے یواے ای کا سفراختیارکرسکیں گے لیکن اس کی شرط یہ ہوگی کہ انھیں اپنی روانگی سے 72 گھنٹے قبل کیے گئے پی سی آر ٹیسٹ کی منفی رپورٹ پیش کرنا ہوگی۔‘‘

اتھارٹی نے مزید کہا ہے کہ ایسے مسافروں کو اپنی حتمی منظورشدہ منزل کے بارے میں بتانا ہوگا اور یواے ای کے بین الاقوامی ہوائی اڈوں کو ایسے راہداری مسافروں کے عارضی قیام کے لیے الگ لاؤنجز کا انتظام کرنا ہوگا۔

نیپال ، سری لنکا اور یوگنڈا سے تعلق رکھنے والے ٹرانزٹ مسافروں پر بھی یواے ای میں داخلے پر پابندی عاید کردی گئی تھی۔

این سیما نے مزید کہا ہے کہ ’’ان ممالک سے تعلق رکھنے والے یواے ای کے کارآمد ویزے کے حامل مسافروں کے داخلے پرعاید پابندی بھی ختم کردی جائے گی۔البتہ ایسے مسافروں کے پاس اماراتی حکام کا مکمل ویکسین لگوانے کا تصدیق شدہ سرٹی فیکیٹ ہونا چاہیے۔

تاہم انھیں یواے ای کے سفرپر روانہ ہونے سے قبل آن لائن داخلہ کے اجازت نامہ کے حصول کے لیے درخواست دینا ہوگی اور انھیں روانگی سے 48 گھنٹے قبل کیے گئے منفی پی سی آر ٹیسٹ کی رپورٹ پیش کرنا ہوگی۔

یواے ای میں جولوگ طب ، تعلیم اور سرکاری شعبوں میں کام کررہے ہیں، تعلیم حاصل کررہے ہیں یا اپناعلاج کرارہے ہیں تو انھیں انسانی کیس کی بنیاد پر ویکسین لگوانے کی پابندی سے مستثنا قرار دے دیا جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں