.
ایرانی ملیشیا

خطے میں ایران کے جارحانہ اقدامات روکنے کے لیے امریکا اور برطانیہ متفق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برطانوی وزیر خارجہ ڈومینک راب نے کل بدھ کو کہا کہ ہے برطانیہ اور امریکا حال ہی میں بحیرہ عرب میں ’’ مرسر اسٹریٹ ‘‘ ٹینکر پر ایرانی حملے کی مذمت میں ’’ متحد ‘‘ ہیں۔

راب نے "ٹویٹر" پر ایک ٹویٹ میں مزید کہا کہ انہوں نے امریکی وزیر خارجہ انٹنی بلنکن کے ساتھ فون پر تبادلہ خیال کیا ہے کہ خطے کو غیر مستحکم کرنے کے ایرانی رویے کو روکنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہم بین الاقوامی امن اور سلامتی کے تحفظ کے لیے مل کر کام کرتے رہیں گے۔

اس سے قبل راب نے کہا تھا کہ سلامتی کونسل کو ایران کے غیر مستحکم اقدامات اور بین الاقوامی قانون کے احترام کی خلاف ورزیوں کا جواب دینا ہوگا۔

انہوں نے تصدیق کی کہ برطانیہ نے اسرائیلی بحری جہاز "مرسر اسٹریٹ" پر ایران کے حملے کے حوالے سے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے صدر کو ایک خط بھیجا ہے۔

یہ بیان ایک ایسے وقت میں سامنے آیا جب اسرائیلی وزیر دفاع بینی گینٹز نے کہا کہ انہوں نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں سفیروں کو بتایا کہ بحر اومان میں حملے کے پیچھے وہ شخص سعید ارجانی تھا جو ایرانی پاسداران انقلاب کے ڈرون یونٹ کا انچارج ہے۔ .

انہوں نے مزید کہا مرسر اسٹریٹ پر حملے کے بارے میں غیر ملکی سفیروں کے ساتھ ایک بریفنگ کے دوران بتایا گیا ہے کہ دنیا کو بین الاقوامی نیوی گیشن کے تحفظ کے لیے مل کر کام کرنا چاہیے۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ ایران جوہری بم کی تیاری کے لیے مواد کے حصول کے لیے صرف دس ہفتے کی دوری پر ہے۔