.

سیف الاسلام قذافی کی نامزدگی پر تنازع ، لیبیا کی وزیر انصاف کا موقف سامنے آ گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا میں سابق سربراہ معمر قذافی کے بیٹے سیف الاسلام کی قانونی حیثیت اور ان کے آئندہ صدارتی انتخابات میں حصہ لینے کے حوالے سے تنازع جاری ہے۔

لیبیا کی خاتون وزیر انصاف حلیمہ عبدالرحمن کا کہنا ہے کہ تمام لوگ لیبیا کے شہری ہیں۔ ان کا اشارہ سیف الاسلام کی جانب تھا۔ انہوں نے مزید کہا کہ انتخابات کے لیے آئینی قاعدے اور انتظامی قانون کے حوالے سے بحث جاری ہے۔

حلیمہ کے مطابق پارلیمانی یا صدارتی امیدواروں کی فہرست میں اگر نامزدگی کے حوالے سے وضاحت طلب نام شامل ہوئے تو اس کا اعلان فوری طور پر کیا جائے گا۔

خاتون وزیر قانون کا کہنا ہے کہ ان کی وزارت نے متعلقہ ادارے کے ساتھ رابطہ جاری رکھا ہوا ہے تا کہ ساعدی قذافی (قذافی کا بیٹا) کو حاصل ہونے والے بری ہونے کے فیصلے پر عمل درامد ہو سکے۔

ساعدی قذافی
ساعدی قذافی

عربی روزنامے "الشرق الاوسط" کے ساتھ خصوصی گفتگو میں حلیمہ عبدالرحمن نے اس امید کا اظہار کیا کہ ایسا کوئی واقعہ یا منظر نامہ رُونما نہیں ہو گا جس کا مقصد انتخابی استحقاق کو برباد کرنا ہو۔

وزیر انصاف نے واضح کیا ہے کہ دو اس وقت دو پہلوؤں پر کام جاری ہے۔ پہلا یہ کہ چوبیس دسمبر کو مقررہ عام انتخابات کا اجرا یقینی بنایا جائے۔ دوسرا یہ کہ بقیہ مدت کے دوران میں معاشرے کے بڑے طبقے کے لیے اہم مسائل کے حل کی بنیاد رکھ دی جائے۔ ان مسائل میں لیبیائی باشندوں کے سفر کو آسان بنانا، عدلیہ کے نظام کو ترقی دینا، اداروں کی اصلاح اور غیر قانونی ہجرت کے معاملے سے نمٹنا شامل ہے۔