.
افغانستان وطالبان

’’طالبان کو امریکا میں موجود افغان زرِمبادلہ کے ذخائر تک رسائی نہیں ملے گی‘‘

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

طالبان کو امریکی بنکوں میں پڑے ہوئے افغانستان کے مرکزی بنک کے زرِمبادلہ کے ذخائر یا دیگر اثاثوں تک رسائی نہیں دی جائے گی۔

یہ بات امریکی انتظامیہ کے ایک اعلیٰ عہدہ دار سوموار کو ایک بیان میں کہی ہے۔اس عہدہ دار نے یہ بیان طالبان کے افغان دارالحکومت کابل پر کنٹرول کے ایک روز بعد یہ بیان جاری کیا ہے۔انھوں نےکہاکہ ’’امریکا میں افغان حکومت کا سنٹرل بنک کا کوئی اثاثہ موجود ہے تو وہ طالبان کے لیے دستیاب نہیں ہوگا۔‘‘

عالمی مالیاتی فنڈ(آئی ایم ایف) کے مطابق افغانستان کے سنٹرل بنک کے اپریل کے آخرتک خام اثاثوں کی مالیت 9 ارب 40 کروڑ ڈالر تھی لیکن ان میں سے بیشترفنڈز یا زرمبادلہ کے ذخائرافغانستان سے باہر تھے۔

ابھی یہ واضح نہیں کہ افغانستان کے امریکا میں کس قسم کے اثاثے موجود ہیں اور امریکا طالبان کی حکومت کے قیام کے بعد انھیں کیونکرمنجمد کرسکے گا۔