.
افغانستان وطالبان

کابل ایئر پورٹ پر سکیورٹی کی صورتحال زیر کنٹرول، پروازوں کا دوبارہ آغاز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

افغانستان میں گذشتہ روز کی نسبت حالات میں بہتری آ گئی ہے، ہوائی اڈے پر جمع ہونے والے عوامی جھتے منتشر ہونے کے بعد سکیورٹی کی صورت حال زیر کنڑول آ گئی ہے۔ سفارتکاروں اور عوام کو نکالنے والی فوجی پروازیں آج صبح سے دوبارہ شروع کر دی گئی ہیں۔

برطانوی خبر ایجنسی رائیٹرز کے مطابق کابل ہوئی اڈے پر عوام کی تعداد کم ہوگئی ہے۔ ایک سکیورٹی اہلکار کے مطابق گذشتہ روز افراتفری پھیلی تھی جس پر امریکی فوجیوں نے ہجوم کو منتشر کرنے کیلئے فائرنگ کی جبکہ عوام امریکی فوجی ٹرانسپورٹ طیارے سے لٹک بھی گئے تھے۔ گذشتہ روز بہت سارے لوگ تھے جو آج گھروں کو چلے گئے۔

امریکی فوج نے ملک سے باہر نکلنے کے واحد راستے کابل ائیرپورٹ کی سکیورٹی کا چارج گذشتہ روز ہی سنبھال لیا تھا۔ خبر ایجنسی نے عینی شاہدین کے حوالے سے بتایا کہ گذشتہ روز پروازیں معطل رہیں جبکہ فائرنگ یا بھگدڑ کے نتیجے میں سات افراد ہلاک ہوئے۔ امریکی فوجی طیارے سے لٹکے تین افراد ہوائی اڈے کے قریب ہی گھروں کی چھتوں پر گر کر ہلاک ہو گئے۔

ادھر افغان میڈیا کے توسط سے سامنے آنے والی اطلاعات کے مطابق دارالحکومت کابل میں حالات معمول پر آ رہے ہیں۔ کچھ دکانیں بھی کھل گئیں۔ کہیں تصادم کی اطلاعات نہیں، سڑکوں پر طالبان کا گشت جاری ہے جبکہ طالبان متعدد شاہرات پر ٹریفک کا نظام بھی سنبھالے ہوئے ہیں۔