.
افغانستان وطالبان

مفرور افغان صدر کے بھائی حشمت غنی نے طالبان کی ’بیعت‘ کرلی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ہفتے کو سابق افغان صدر اشرف غنی کے بھائی حشمت غنی نے طالبان کے وفد سے ملاقات کے بعد طالبان کی بیعت کا اعلان کیا ہے۔ خیال رہے کہ صدر اشرف غنی پندرہ اگست کو طالبان کے کابل پر قبضے کے بعد ملک چھوڑ گئے تھے جب کہ ان خاندان کے بیشتر افراد اب بھی ملک کے اندر موجود ہیں۔

تحریک طالبان نے اپنے ’ٹویٹر‘ اکاؤنٹ کے ذریعے ایک ٹویٹ میں کہا کہ سابق صدر اشرف غنی کے بھائی حشمت غنی نے حاجی خلیل رحمان حقانی کے ہاتھوں امارت اسلامیہ افغانستان پر بیعت کرلی ہے۔

میڈیا کے ذریعے جاری ہونے والی ایک ویڈیو میں حشمت غنی کو طالبان کے ہاتھ بیعت کرتے دیکھا جاسکتا ہے۔

افغان "اسواکا" نیوز ایجنسی نے "ٹویٹر" پر ایک ٹویٹ کے ذریعے ایک تصویر شائع کی جس میں حشمت غنی کو بیعت کے دوران کئی طالبان رہ نماؤں کے ساتھ دکھایا گیا ہے۔

قابل ذکر ہے کہ افغان صدر نے بدھ کے روز اپنے فرار کے بعد اپنی پہلے باضابطہ رد عمل میں کہا تھا کہ افغانستان کے لوگوں کے خون خرابے سے بچانے کے لیے کابل چھوڑنا پڑا۔ انہوں نے کہا کہ مجھے خونریزی اور ایک بڑی تباہی کو روکنے کے لیے ملک سے باہر جانا پڑا۔

انہوں نے متحدہ عرب امارات سے افغان عوام سے خطاب میں مزید کہا کہ ملک چھوڑتے وقت پیسے ساتھ لانے کے الزامات بے بنیاد ہیں۔