.

کویت میں مقیم غیرملکی اپنے نام کتنی گاڑیاں رجسٹرکرا سکتے ہیں؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کویت کی وزارت داخلہ نے غیرملکیوں کے نام رجسٹر کی جانے والی گاڑیوں کی تعداد کومحدود کرنے کافیصلہ کیا ہے۔سیکورٹی ذرائع کے مطابق بہت سے غیرملکی متعدد کاروں کے مالک ہیں اور وہ بغیرلائسنس ان گاڑیوں کی خریدوفروخت کا دھندا کرتے ہیں۔

کویتی روزنامہ الرائے کی رپورٹ کے مطابق کویت میں سیکڑوں غیرملکیوں کے پاس پچاس ، پچاس یا اس سے زیادہ کاریں ہیں۔ وہ ان کاروں کی خریدوفروخت اوریا انھیں لیز پر دینے کا کاروبارکرتے ہیں مگران کے پاس ایسا کاروبارکرنے کے لیے مجاز اتھارٹی کا جاری کردہ لائسنس نہیں ہے جس کی وجہ سے جنرل ٹریفک ڈیپارٹمنٹ نے غیرملکیوں کی ملکیت میں کاروں کی تعدادمحدود کرنے کاقانونی پہلوؤں سے جائزہ لیا ہے۔

اس خلیجی ریاست میں محکمہ ٹریفک کی جانب سے کیے گئے ایک سروے سے پتا چلا ہے کہ بہت سے کویتی مکین اپنی ملکیتی استعمال شدہ کاروں کی خریدوفروخت کررہے ہیں۔

سیکورٹی ذرائع نے مبیّنہ طورپربتایا کہ گاڑیوں کی خرید وفروخت کا کاروبارکرنے والے بہت سے غیرملکی تجارتی لائسنس حاصل کیے بغیربھاری رقوم کمارہے ہیں جبکہ گاڑیوں کی خریدوفروخت کے کاروبار کو منظم کرنے کے لیے مجازحکام کا جاری کردہ اجازت نامہ درکار ہوتا ہے۔اس لائسنس کے ذریعے ہی وزارت تجارت سالانہ فیس وصول کرتی ہے۔

مارچ میں یہ اطلاع سامنے آئی تھی کہ کویت میں مقیم دو لاکھ سے زیادہ تارکین وطن کرونا وائرس کی وبا کی وجہ سے ایک سال میں اپنی رہائش گاہوں سے محروم ہوگئے ہیں۔

گذشتہ سال کویت کی قومی اسمبلی نے ملک میں تارکین وطن کارکنوں کی تعداد محدود کرنے اور مختلف قسم کے ویزوں کی منتقلی پرپابندی عایدکرنےکے بل کا مسودہ تیار کیا تھا۔