.

ریسکیو کے بعد افغانستان کے دو کھلاڑیوں کی پیرالمپکس میں شرکت کرنے ٹوکیو آمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

افغانستان سے تعلق رکھنے والے دو کھلاڑی جاپان میں معذور کھلاڑیوں کے لیے جاری پیرالمپکس میں شرکت کرنے ٹوکیو پہنچ گئے ہیں۔

انٹرنیشنل پیرالمپکس کمیٹی (آئی پی سی) کے عہدے دار نے جاپان کی خبر رساں ایجنسی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ان دونوں کھلاڑیوں کو افغانستان سے بچا کر نکالنا اور پھر ان کھیلوں میں شرکت کرنے جاپان پہنچانا اور یہاں خوش آمدید کرنا ’بہت ہی جذباتی‘ لمحہ تھا۔

ان کھلاڑیوں میں ایک خاتون ٹائی کوانڈو کھلاڑی ذکیہ خدادی اور دوسرے ٹریک اینڈ فیلڈ کھلاڑی حسین رسولی ہیں۔

ان دونوں کھلاڑیوں کو گذشتہ ہفتے افغانستان سے نکالا گیا تھا اور وہ ہفتے کی شام ٹوکیو بذریعہ پیرس پہنچے ہیں۔

آئی پی سی کے مطابق یہ دونوں کھلاڑی اب اولمپکس ولیج میں قیام پذیر ہیں اور اپنے کھیلوں کے لیے تیاری کر رہے ہیں۔

آئی پی سی کے صدر اینڈریو پارسنس نے ایک بیان میں کہا کہ ذکیہ اور حسین اپنے خواب کی تکمیل کرنے اب ٹوکیو میں موجود ہیں اور دنیا بھر میں لوگوں کو امید کا پیغام دے رہے ہیں۔

آئی پی سی کے ترجمان کریگ سپینس نے مزید بتایا: ’ان سے ملاقات بہت ہی جذباتی تھی۔ اس کمرے میں موجود ہر کسی کی آنکھوں میں آنسو تھے۔ یہ بہت ہی زبردست میٹنگ تھی۔‘

واضح رہے کہ آئی پی سی نے پہلے کہا تھا کہ وہ ان دونوں کھلاڑیوں کو ٹوکیو تک نہیں پہنچا سکیں گے لیکن اس کے بعد متعدد ممالک کی حکومتوں اور مختلف تنظیموں نے ایک ’مشترکہ عالمی آپریشن‘ کیا تاکہ ان دونوں کی مدد کی جا سکے اور انھیں ٹوکیو تک پہنچایا جا سکے۔