داعش کا کابل کے ہوائی اڈے پرراکٹ حملے کی ذمہ داری قبول کرنے کا دعویٰ

امریکا کے میزائل دفاعی نظام نے پانچ راکٹوں کو ناکارہ بنادیا،غیرملکیوں کے انخلا کا عمل جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سخت گیر جنگجو گروپ داعش نے افغان دارالحکومت کابل کے حامد کرزئی بین الاقوامی ہوائی اڈے پر سوموار کو راکٹ حملے کی ذمہ داری قبول کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

داعش کی ناشرنیوز نے اپنے ٹیلی گرام چینل پر کہا ہے کہ ’’اللہ کے فضل سے خلافت کے فوجیوں نے کابل کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کو چھے کاتیوشا راکٹوں سے نشانہ بنایا ہے۔‘‘

قبل ازیں ایک امریکی عہدہ دار نے بتایا کہ آج صبح امریکا کے میزائل دفاعی نظام نے کابل کے ہوائی اڈے کی جانب فائرکیے گئے پانچ راکٹوں کو ناکارہ بنا دیا ہے۔
امریکی صدرجوبائیڈن نے بھی اس راکٹ حملے کی تصدیق کی ہے اور کہا ہے کہ اس سے ہوائی اڈے سے فوجیوں اور غیرملکیوں کے انخلاپر کوئی فرق نہیں پڑا ہے۔

بعض عینی شاہدین نے بتایا ہے کہ انھوں نے صبح کے مصروف اوقات سے قبل راکٹ چلنے کی آوازیں سنی تھیں۔افغانستان کی معزول انتظامیہ میں فرائض انجام دینے والے ایک سکیورٹی اہلکارکا کہنا ہے کہ کابل کے شمال میں ایک گاڑی سے راکٹ چھوڑے گئے تھے۔اس کے بعد ہوائی اڈے کے میزائل دفاعی نظام کے چلنے کی آواز بھی سنائی دی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں