.

سعودی عرب :سکیورٹی فورسزپرحملے کی منصوبہ بندی اوراسلحہ اسمگلنگ میں ملوّث شخص کا سرقلم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں سکیورٹی فورسز پر دہشت گردی کے حملے کی منصوبہ بندی اوراس مقصد کے لیے ہتھیاروں کی اسمگل میں ملوّث ایک شخص کا سرقلم کردیا گیا ہے۔

سعودی پریس ایجنسی (ایس پی اے) نے سوموارکو وزارت داخلہ کے حوالے سے خبردی ہے کہ مجرم عدنان بن مصطفیٰ الشرفا سعودی شہری تھا۔وہ مملکت میں ہتھیار اسمگل کرکے لاتا رہاتھااوریہاں سے باہر بھی لے جاتا رہاتھا۔وہ ایک ایسے دہشت گرد سیل کا حصہ تھا جس کا مقصد ’مملکت کی سلامتی کو عدم استحکام‘ سے دوچار کرنا تھا۔

بیان میں بتایا گیا ہے کہ یہ دہشت گرد سیل سعودی عرب کی سکیورٹی فورسز کے اہلکاروں کو ان کے ہیڈ کوارٹرزمیں نشانہ بنانے کی منصوبہ بندی کررہا تھا۔

رپورٹ کے مطابق سیکورٹی حکام نے الشرفا کو گرفتار کر لیا تھا اوراس کا مقدمہ خصوصی فوجداری عدالت کو بھیج دیا تھا جہاں اس کے خلاف تحقیقات کے بعد مقدمے کی سماعت کی گئی ہے۔

وزارت نے بتایاکہ عدالت نے اس کے جرم کی سنگینی اور دہشت گردی کی کارروائی کے ارادے کے پیش نظراس کو قصور وار قرار دے کرسزائے موت سنائی تھی۔فوجداری عدالت کے اس فیصلے کو خصوصی اپیل عدالت اورسپریم کورٹ نے برقرار رکھا اور پھر ایک شاہی حکم کے تحت اس فیصلے پرعمل درآمد کیاگیا ہے۔