.

سعودی شاہ سلمان نے ڈائریکٹر پبلک سیکورٹی کو برطرف کر دیا،بدعنوانیوں کی تحقیقات کا حکم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے مملکت کی عوامی سلامتی (پبلک سکیورٹی) کے سربراہ فرسٹ لیفٹیننٹ جنرل خالد بن قرار الحربی کو برطرف کرنے کا حکم دیا ہے۔

سعودی پریس ایجنسی کے مطابق ایک شاہی فرمان کے ذریعے خالدالحربی کو سرکاری ملازمت سے جبری ریٹائرکردیا گیا ہے اورعوامی سلامتی کے اعلیٰ سربراہ کے طور پر ان کی بدعنوانیوں اور غلط کاریوں کی تحقیقات کا آغاز کردیا گیا ہے۔

شاہی فرمان میں کہا گیا ہے کہ’’ الحربی نےذاتی استعمال کے لیے عوامی دولت اینٹھنے کے مقصد سے اپنے عہدے کا ناجائزاستعمال کیا ہے۔ان پرسرکاری اور نجی شعبے سے تعلق رکھنے والے اٹھارہ افراد کی شرکت سے جعل سازی، رشوت ستانی اورعہدے اور اثرورسوخ کے ناجائزاستعمال سمیت متعدد جرائم کا ارتکاب کرنے کا الزام عاید کیا گیا ہے۔‘‘

توقع ہے کہ سعودی عرب کا قومی انسداد بدعنوانی کمیشن (نزاہۃ) خالد الحربی اور ان سے وابستہ افراد کے خلاف بدعنوانیوں کی تحقیقات مکمل کرے گا۔

اس سے قبل حالیہ ہفتوں میں اس کمیشن نے 20 نئے کیسوں کی تحقیقات شروع کی تھی۔ان میں سے بعض میں داخلہ اور نیشنل گارڈ کی وزارتوں کے سابق سیکورٹی حکام بھی ملوّث بتائے گئے ہیں۔