.

گیارہ ستمبر کے حملوں سے متعلق دستاویز ، سعودی عرب کے ملوث نہ ہونے کی تصدیق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کئی برسوں تک چھپائے رکھنے کے بعد آخر کار امریکی ایجنسی(FBI) نے ہفتے کی شام 16 صفحات پر مشتمل ایک اہم دستاویز کو جاری کر دیا۔ یہ دستاویز 11 ستمبر کے دہشت گرد حملوں سے پہلے گزرے عرصے سے متعلق ہے۔ دستاویز کی راز داری کو کچھ عرصہ قبل ختم کیا گیا۔

دستاویز میں ان حملوں میں سعودی حکومت کے کسی بھی صورت ملوث ہونے کے حوالے سے کوئی دلیل پیش نہیں کی گئی ہے۔ یاد رہے کہ بیس برس قبل ان خوف ناک حملوں میں تقریبا 3 ہزار افراد اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے تھے۔

امریکی سرکاری کمیٹی کو اس بات کا بھی کوئی ثبوت نہیں ملا کہ سعودی عرب نے القاعدہ تنظیم کو مالی رقوم فراہم کی تھیں۔

یاد رہے کہ سعودی عرب کے کئی موجودہ اور سابق ذمے داران بارہا یہ باور کرا چکے ہیں کہ ان دہشت گرد حملوں سے مملکت کی حکومت کا کوئی تعلق نہیں۔

واشنگٹن میں سعودی عرب کے سفارت خانے کی جانب سے 8 ستمبر کو جاری ایک بیان میں زور دیا گیا کہ مملکت 11 ستمبر کے واقعات کے حوالے سے ہمیشہ سے شفافیت کی تائید کرتی ہے۔ سعودی عرب ان حملوں سے متعلق امریکی حکام کی جانب سے اُن دستاویزات کے جاری کیے جانے کا خیر مقدم کرتی ہے جن کی رازادی ختم کر دی گئی ہے۔

حالیہ جاری دستاویز میں اس بات کی کوئی دلیل یا اشارہ نہیں ملتا کہ مملکت کی حکومت یا اس کے کسی بھی ذمے دار کو 11 ستمبر کے حملوں کا پیشگی علم تھا۔