حزب اللہ کے اشتہاری کمانڈر کی گرفتاری میں معاونت پر7ملین ڈالر کا انعام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

کل پیر کو امریکی محکمہ خارجہ نے لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ کے ایک سینیر کمانڈر کو اشتہاری قرار دیتے ہوئے اس کی گرفتاری میں مدد دینے پر 7ملین ڈالر کے انعام کا اعلان کیا ہے۔

امریکی محکمہ خارجہ کی طرف سےٹویٹر پرپوسٹ کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ ایرانی حمایت یافتہ حزب اللہ کے بیرونی سیکیورٹی دفتر کے سربراہ طلال حمیہ کے بارے میں معلومات کے بدلے میں 7 ملین ڈالر فراہم کرے گا۔ طلال حمیہ امریکا اور اسرائیل دونوں کو مطلوب ہے۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ حمیہ پوری دنیا میں دہشت گرد تنظیم کے سیلز کی سرگرمیوں کا ذمہ دار سمجھا جاتا ہے۔

تفصیلات میں وزارت خارجہ نے واضح کیا کہ حزب اللہ دنیا بھر میں منظم سیلز کو برقرار رکھتی ہے جبکہ حزب اللہ میں بیرونی سیکورٹی ڈیپارٹمنٹ ان کے درمیان منصوبہ بندی اور ہم آہنگی کے ساتھ ساتھ لبنان سے باہر دہشت گردانہ حملوں کی ذمہ دار ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ حزب اللہ کا بیرون ملک سیکیورٹی دفتر کے حملوں میں اسرائیل اور امریکا کو نشانہ بنایا گیا لیکن اس نے ان تاریخوں یا مقامات کے بارے میں کوئی معلومات فراہم نہیں کیں جن میں یہ حملے ہوئے تھے۔

یاد رہے کہ امریکی محکمہ انصاف نے اگست 2021ء میں حزب اللہ کے ایک دوسرے کمانڈر خلیل یوسف حرب کے بارے میں معلومات دینے پر5 ملین ڈالر کا انعام مقرر کیا گیا تھا۔ خلیل یوسف پر یمن کے حوثی باغیوں کو رقوم کی منتقلی میں ملوث ہونے کا الزام ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں