.
افغانستان وطالبان

افغانستان: ہلمند کا تاریخی قلعہ طالبان کے ہاتھوں تباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

افغانستان کے صوبے ہلمند میں ایک تاریخی قلعے کو تباہ کیے جانے کی تصاویر سامنے آئی ہیں۔

طالبان تحریک کے عناصر نے ہلمند کے قصبے گرشک میں 170 سال پرانے قلعے (بالا حصار) کو تباہ کر دیا۔ یہ بات ایک مقامی خبر رساں ایجنسی آسواکا نے جمعے کے روز بتائی۔

ایجنسی کے مطابق یہ قدیم تاریخی قلعہ پرانی جیل تھا۔ اس کو سردار صدیق خان نے شہزادہ حبیب اللہ کے دور میں بحال کیا تھا۔

علاقے کے لوگوں اور سوشل میڈیا پر بہت سے افغانوں نے طالبان کی جانب سے اس نوعیت کے تصرفات پر اپنی گہری تشویش کا اظہار کیا ہے۔

واضح رہے کہ طالبان نے کئی سال قبل ہلمند صوبے پر کنٹرول کے واسطے شدید حملے کیے تھے۔ اس دوران میں طالبان پر شہریوں کو نشانہ بنانے کا الزام بھی عائد کیا گیا تھا۔

علاوہ ازیں طالبان تحریک کو کئی خلاف ورزیوں کا مرتکب ٹھہرایا جاتا ہے۔ ان میں شمالی اتحاد کے مقتول رہ نما احمد شاہ مسعود کے مزار پر حملہ بھی شامل ہے۔

دارالحکومت کابل پر طالبان کے کنٹرول کے بعد سے بہت سے افغانوں نے بیرون ملک راہ فرار اختیار کی۔ انہیں طالبان کی جانب سے انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے ارتکاب کا اندیشہ تھا۔