.

سعودی عرب کے قومی دن پرجشن کا سماں؛رنگ رنگاآتش بازی اور تقریبات کاانعقاد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے 91 ویں قومی دن پر مملکت بھر میں جشن کا سماں ہے،بڑے شہروں میں آتش بازی کے مظاہرے کیے جارہے ہیں اور مختلف تقریبات منعقد کی جارہی ہیں۔

سعودی عرب کا قومی دن ہر سال 23 ستمبر کو منایا جاتا ہے۔مملکت کےبانی شاہ عبدالعزیزآل سعود نے ایک شاہی فرمان کے ذریعے1932ء میں اسی تاریخ کونجداور حجازکا نام تبدیل کرکے مملکت سعودی عرب رکھا تھا۔

سعودی عرب کی جنرل انٹرٹینمنٹ اتھارٹی (جی ای اے) نے قبل ازیں جمعرات کو ہونے والی رنگا رنگ تقریبات کی ایک فہرست کا اعلان کیا تھا۔وزارت صحت نے تمام شہریوں اورمکینوں پر زور دیا کہ وہ کووِڈ-19 کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے ان تقریبات کے دوران میں احتیاطی تدابیر پرعمل کریں۔

سعودی عرب کے قومی دن کے موقع پرمنعقد ہونے والی تقریبات کی مختصر تفصیل یہ ہے:

محافلِ موسیقی

جی ای اے ملک کے چند ممتاز گلوکاروں کے ساتھ قومی دن کے موقع پرتین رات تک خصوصی کنسرٹ منعقد کررہی ہے۔اس میں راشد الماجد، ماجد المہندس، اصیل ابوبکرسالم، دلیا مبارک اور عاید اپنے فن کا مظاہرہ کریں گے۔

موسیقی کی یہ محفلیں 23 سے 25 ستمبر تک الریاض کے شاہ فہد ثقافتی مرکزمیں منعقد ہورہی ہیں۔

پلاٹینم لسٹ کی ٹکٹنگ ویب سائٹ کے مطابق شو کی پہلی دو راتوں کے ٹکٹ پہلے ہی فروخت ہو چکے ہیں لیکن ہفتہ کی رات کنسرٹ کے کچھ ٹکٹ اب بھی خریداری کے لیے دستیاب ہیں۔

آتش بازی کا مظاہرہ

سعودی عرب میں قومی دن کی تقریبات بڑے پیمانے پرآتش بازی کے شو کے بغیر مکمل نہیں ہوتی ہے اور رات کے وقت رنگا رنگ آتش بازی کا مظاہرہ کیا جاتا ہے۔جی ای اے کا کہنا ہے کہ یہ شو قومی دن کی شام کی ’سب سے اہم‘ سرگرمی ہوگا۔جی ای اے کے مطابقرات 9 بجے سے مملکت کے 13 شہروں میں آتش بازی کے ان رنگارنگ مظاہروں کا آغاز ہوگا۔

گذشتہ برسوں میں سعودی شہری اور رہائشی اس شاندار شو کو دیکھنے کے لیے ملک بھر کی سڑکوں پر اُمڈ آتے تھے لیکن گذشتہ سال کووِڈ-19 کی پابندیوں کے وجہ سے لوگوں کی آزادانہ نقل وحرکر پر پابندی تھی۔اس مرتبہ وزارت صحت نے کہا کہ جو افراد اس سال قومی دن کی تقریبات سے محظوظ ہونا چاہتے ہیں،انھیں ان تقریبات کے دوران میں کووڈ-19 سے محفوظ رہنے کے لیے نافذالعمل اقدامات کی پاسداری کرنی چاہیے۔

فوجی پریڈ

وزارت داخلہ جی ای اے کے تعاون سے دارالحکومت الریاض اور جدہ میں ایک گھنٹے کی طویل فوجی پریڈ کا اہتمام کررہی ہے۔اس پریڈ کی تاریخ میں پہلی مرتبہ خواتین شریک ہورہی ہیں۔

جی ای اے کے سرگرمیوں کے پروگرام کے مطابق شاہی محافظ فورسز دارالحکومت کی سڑکوں پر رات ساڑھے آٹھ بجے سے مارچ کریں گی جبکہ پریڈ کا آغازجدہ میں رات 8 بج کر15 منٹ پر ہوگا۔

اس پریڈ سے قبل ہونے والی دیگرسرگرمیوں میں ان درجنوں پرانی کاروں کی نمائش بھی شامل ہے جو برسوں سعودی عرب کے بادشاہوں کے زیراستعمال رہی تھیں اور اس کے علاوہ گھوڑوں کے شو منعقد ہوں گے اور مختلف بینڈ بھی اپنے فن کا مظاہرہ کررہے ہیں۔

فضائی اور بحری شو

سعودی عرب کے قومی دن کی تقریبات کے حصے کے طور پرجی ای اے نے ایک خصوصی فضائی شو کا بھی اہتمام کیا ہے۔اس میں فوجی اورسویلین طیارے مملکت کی فضاؤں میں پرواز کرتے اور کرتب دکھاتے نظرآئیں گے۔

دارالحکومت الریاض کے علاوہ دوسرے شہروں جدہ، طائف، ابھا، تبوک، الباحہ، الخُبر اورالجبیل میں جمعرات کوشام چاربجے سے یہ فضائی شو منعقد ہورہے ہیں۔

جی ای اے کے مطابق جدہ اورالخُبرکی ساحلی پٹی میں ایک منفرد سمندری شو کا بھی انعقاد کیا جارہا ہے۔

قومی دن کی یاد میں مملکت میں فارمولا ون ریس کارکی دنیا کی سب سے بڑی لیگو بنانے کی کوشش کررہی ہے اور اس سے سعودی عرب اپنا ریکارڈ توڑنے کی کوشش کرے گا۔

اتھارٹی کی جانب سے شہریوں اور رہائشیوں کو بلاکوں کو جوڑ کرلیگو بنانے کے عمل میں حصہ لینے کی دعوت دی گئی تھی۔اس کا آغاز15 ستمبر کو مکہ ریجن کے گورنر کے مشیراور جدہ کے قائم مقام گورنر شہزادہ سعود بن عبداللہ بن جلاوی اور سعودی آٹو موبائل اینڈ موٹرسائیکل فیڈریشن (ایس اے ایم ایف) کے چیئرمین شہزادہ خالد بن سلطان العبداللہ الفیصل نے کیا تھا اور انھوں نے پہلا بلاک بنایا تھا۔

اسمبلی بنانے کا عمل جدہ کے ریڈ سی مال میں ہورہا ہے۔جمعرات کو گنیز ورلڈ ریکارڈز کے نمائندے لائیو اسٹریم کے ذریعے فارمولا ون کار کی لیگو بلاک کی تعمیرکو دنیا کی سب سے بڑی کار کے طور پرریکارڈ کرنے اور تصدیق کرنے کے لیے موجود ہوں گے۔