.

متحدہ عرب امارات کی کابینہ اور وفاقی حکومت کے ڈھانچے کی تشکیلِ نو کا اعلان

حالیہ رد وبدل کے تحت کابینہ میں نو خواتین وزیر شامل کی جا رہی ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات نے ہفتے کے روز اگلے 50 سال کے لیے وفاقی حکومت کے نئے ڈھانچےکا اعلان کیا ہے اور نئی کابینہ میں شیخ مکتوم بن محمد کونیا نائب وزیراعظم اور وزیرخزانہ مقرر کیا ہے۔

متحدہ عرب امارات کے نائب صدر،وزیراعظم اور دبئی کے حاکم شیخ محمد بن راشد آل مکتوم نے ہفتے کے روز ٹویٹر پرنئی کابینہ کا اعلان کیا ہے۔

انھوں نے ایک ٹویٹ میں کہا ہے:’’بھائیو اور بہنو!میں اپنے بھائی عزت مآب شیخ محمد بن زاید سے مشاورت اور اپنے بھائی عزت مآب شیخ خلیفہ بن زاید (صدر یواے ای) کی منظوری کے بعد یواے ای کے نئے حکومتی ڈھانچے کا اعلان کررہا ہوں۔ان صاحبان نے متعلقہ افراد کو ہدایت کی ہے کہ وہ ہماری کامیابیوں کو محفوظ رکھنے اور قومی ترقی کے عمل کو تیز کرنے کے لیے تمام وسائل بروئے کار لائیں۔‘‘

حاکم دبئی نے متعدد ٹویٹس میں نئی حکومت سے متعلق تفصیل جاری کی ہے۔انھوں نے کہا کہ’’ہمارا مقصد تیزرفتار فیصلہ سازی کی صلاحیتوں کے ساتھ ایک ایسی حکومت تشکیل دینا ہےجوتازہ پیش رفت کے ساتھ ہم آہنگ ہو،مواقع سے زیادہ سے زیادہ فائدہ اٹھانے اور اپنی تاریخ کے اس نئے دور سے نمٹنے کی صلاحیت کی حامل ہو اور یہ ایک ایسی لچکدارحکومت ہونی چاہیے جس کا مقصد قوم کی کامیابیوں کوجاری رکھنا ہے۔‘‘

وہ مزید لکھتے ہیں:’’آج ہم وزارتوں اوراتھارٹیوں کے انضمام، حکام کے اختیارات اورذمے داریوں کو دوبارہ مختص کرنے اور متحدہ عرب امارات کی حکومت کی تشکیلِ نو کا اعلان کرتے ہیں۔ ہم سرکاری خدمات کے 50 فی صد مراکز بند کر رہے ہیں اورانھیں دو سال کے اندر ڈیجیٹل پلیٹ فارم میں تبدیل کر رہے ہیں، 50 فی صد وفاقی حکام کو دیگر حکام یا وزارتوں میں ضم کر رہے ہیں اور نئے وزرائے مملکت اورمختلف شعبوں کے ماہرچیف ایگزیکٹو افسروں کا تقررکررہے ہیں۔‘‘

یواے ای کی نئی کابینہ اور نیا حکومتی ڈھانچا کچھ یوں ہے:

  • شیخ محمد بن راشد آلِ مکتوم، نائب صدر، وزیر اعظم اور وزیر دفاع۔
  • لیفٹیننٹ جنرل شیخ سیف بن زاید آلِ نہیان، نائب وزیر اعظم اور وزیر داخلہ۔
  • شیخ منصور بن زید آلِ نہیان، نائب وزیراعظم اور صدارتی امور کے وزیر۔
  • شیخ حمدان بن راشد آل مکتوم، کابینہ کے رکن اور وزیر خزانہ۔
  • شیخ عبداللہ بن زید آل نہیان، کابینہ کے رکن اور وزیربرائے خارجہ امور اوربین الاقوامی تعاون۔
  • شیخ نہیان بن مبارک آل نہیان، کابینہ کے رکن اور وزیربرائے رواداری اور بقائے باہمی۔
  • محمد بن عبداللہ الجرجاوی، کابینہ کے رکن اوروزیربرائے کابینہ اموراور مستقبل ۔
  • احمد جمعہ الزابی، وفاقی سپریم کونسل امورکے وزیر۔
  • عبدالرحمٰن بن محمد بن ناصر الاویس، کابینہ رکن، وزیر صحت اور وفاقی قومی کونسل کے امور کے وزیرمملکت۔
  • ڈاکٹرانوربن محمد قرقاش ،کابینہ کے رکن اور وزیر مملکت برائے امور خارجہ ۔
  • عبید حمیرالطائر، کابینہ کے رکن اور وزیر مملکت برائے مالیاتی امور۔
  • ریم بنت ابراہیم الہاشمی، کابینہ کی رکن اور بین الاقوامی تعاون کی وزیرمملکت۔
  • سہیل بن محمد المزروئی، کابینہ کے رکن اور وزیربرائے توانائی اور بنیادی ڈھانچا۔
  • ڈاکٹرعبداللہ بالہایف النعیمی، کابینہ کے رکن اور ماحولیاتی تبدیلی اور ماحولیات کے وزیر۔
  • ڈاکٹر سلطان بن احمد الجابر، کابینہ کے رکن اور وزیر صنعت اورترقی یافتہ ٹیکنالوجی۔
  • سلطان بن سعید البدی، کابینہ کے رکن اور وزیر انصاف۔
  • حسین بن ابراہیم الحمادی، کابینہ کے رکن اور وزیرتعلیم۔
  • محمد بن احمد البوردی، کابینہ کے رکن اور وزیر مملکت برائے دفاع۔
  • نورا بنت محمد الکعبی، کابینہ کی رکن اور وزیر ثقافت وامورنوجواناں۔
  • جمیلہ بنت سالم المہیری، کابینہ کی رکن اور وزیرمملکت برائے عوامی تعلیم۔
  • ناصر بن ثانی الحملی، کابینہ کے رکن اور انسانی وسائل کے وزیر۔
  • حیصہ بنت ایسا بوحمید، کابینہ کی رکن اور کمیونٹی ڈویلپمنٹ کی وزیر۔
  • عبداللہ بن طوق المری، کابینہ کے رکن اور وزیر معیشت۔
  • ڈاکٹر میثا بنت سالم الشمسی، وزیر مملکت۔
  • ڈاکٹراحمد بالہول الفلاسی، وزیرمملکت برائے انٹرپرینیورشپ اور ایس ایم ایز۔
  • ڈاکٹرثانی بن احمد الزیودی، وزیر مملکت برائے خارجہ تجارت۔
  • اوہود بنت خلفان الرومی، وزیر مملکت برائے حکومت ترقی و مستقبل۔
  • شما بنت سہیل المزروئی، وزیر مملکت برائے امورنوجواناں۔
  • ذکی نصیبہ، وزیر مملکت۔
  • مریم بنت محمد المہیری، وزیرمملکت برائے خوراک و آبی سلامتی۔
  • سارہ بنت یوسف العامری، جدید ٹیکنالوجی کی وزیرمملکت۔
  • عمربن سلطان العالمہ، مصنوعی ذہانت، ڈیجیٹل معیشت اور ٹیلی ورکنگ ایپلی کیشنز کے وزیرمملکت۔
  • احمد علی السیغ، وزیرمملکت۔

متحدہ عرب امارات کی حکومت میں مختلف محکموں کے نئے سربراہان (سی ای اوز) کے نام یہ ہیں:

  • محمد سلطان العبیدلی، قانونی امور کے سربراہ۔
  • محمد حماد الکویتی،سائبر سیکورٹی کے سربراہ۔
  • سعید العطار، سرکاری میڈیا آفس کے سربراہ۔
  • ہدیٰ الہاشمی، حکومتی حکمت عملی برائے ایجادات کی سربراہ۔
  • حمادالمنصوری ،سربراہ ڈیجیٹل حکومت کے سربراہ ۔
  • محمد بن تالیا، سرکاری خدمات کے سربراہ۔