.

مصر: چلتی ٹرین میں چھوٹے بھائی کے ہاتھوں برادر اکبر کا بہیمانہ قتل

لین دین کے تنازع پر چھوٹے بھائی نے مسافروں کے سامنے بڑے بھائی پر گولیاں برسائیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر میں قانون نافذ کرنے والے اداروں نے بتایا ہے کہ ملک کے شمالی علاقے المنوفیہ میں چلتی ٹرین کے دوران قتل کی لرزہ خیز واردات ہوئی۔

السادات شہر کے محکمہ پولیس کو وائرس لیس پر اطلاع ملی کہ شہد کے تاجر کو گولی مار دی گئی ہے۔ شہد کے تاجر کا قتل چلتی ٹرین میں مسافروں کے سامنے ہوا۔

اس دلخراش واقعے کی ابتدائی تحقیقات سے معلوم ہوا ہے کہ قنا سے تعلق رکھنے والے مقتول عبدالحفیظ السادات شہر کے نیو کفر داود قصبے میں مقیم تھے۔ مقتول کے چھوٹے بھائی نے انہیں چلتی ٹرین میں گولی مار کر ہلاک کر دیا۔

تفیصلات کے مطابق قاتل نے اپنے بڑے بھائی سے مالی تنازع اور وارثتی معاملات پر اختلاف کی وجہ سے ٹرین میں ان کے سر پر تین گولیاں ماریں، جس سے وہ موقع پر ہی ہلاک ہو گیا۔

مقتول کی لاش السادات ہسپتال منتقل کر دی گئی ہے۔ واقعے کی ایف آئی آر درج کر لی گئی ہے جس کے بعد پراسیکیوشن نے معاملے کی تحقیقات شروع کر دی ہیں۔