.

ناقابل یقین! اطالوی دارالحکومت کی سڑکوں پر سُوروں کا دھاوا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اطالیہ کے دارالحکومت روم میں سڑکوں پر جنگلی سور (خنزیر) کے غول نظر آنا شروع ہو گئے ہیں۔ روزانہ شہر کے اطراف وسیع مقامات سے 10 سے 30 چھوٹے بڑے جنگلی سور آ کر شہر کی سڑکوں میں ٹریفک کے رش میں گھس جاتے ہیں۔ یہ سور شہر میں کچرے کے ڈبے یا ڈرموں میں کھانے کی چیزیں تلاش کرتے ہیں جس کے باعث اطالوی دارالحکومت جانا جاتا ہے۔

اس صورت حال کے سبب غصے کے مارے روم کے لوگوں نے سوشل میڈیا پر وڈیو کلپس پوسٹ کرنا شروع کر دیے ہیں جن میں یہ سور لوگوں کی آمد و رفت کے بیچ کچرے کے ڈبوں سے چیزیں نکال کر کھا رہے ہوتے ہیں۔

رواں ہفتے کے اختتام پر روم میں مقامی انتخابات کی تیاریاں جاری ہیں۔ ایسے میں "جنگلی سوروں کے دھاوے" کو روم کی خاتون میئر ورجینیا راجی کے خلاف سیاسی ہتھیار کے طور پر استعمال کیا جا رہا ہے۔ اس کی وجہ شہر میں کچرے کا ڈھیر جمع ہونے سے پیدا ہونے والی مشکلات ہیں۔

ماہرین کے نزدیک سوروں کی تعداد میں اضافے سے یہ معاملہ زیادہ پیچیدہ ہو گیا ہے۔

اطالیہ میں مرکزی زرعی لابی "کولدیریتی" کے اندازے کے مطابق ملک میں بیس لاکھ سے زیادہ جنگلی سور پائے جاتے ہیں۔

ذرائع کے مطابق روم کے پارکوں میں سوروں کی تعداد پانچ سے چھ ہزار ہے۔