.

قطر میں پہلی قانون سازکونسل کے انتخاب کے لیے پولنگ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

قطر میں ہفتے کے روز قانون ساز کونسل کے پہلے انتخابات کے لیے پولنگ جاری ہے اور اہل ووٹراپنا حق رائے دہی استعمال کررہے ہیں۔مشاورتی کونسل کی 45 میں سے 30 نشستوں پرانتخابات ہورہے ہیں۔

یہ انتخابات حکمران خاندان سے اقتدار کی منتقلی کا باعث تونہیں بنیں گے۔البتہ یہ جمہوریت کی طرف بڑی حد تک علامتی پیش رفت کا سبب ہوسکتے ہیں۔

کونسل کاانتخاب لڑنے والے امیدواروں میں زیادہ تر مرد ہیں اور کونسل کی 30 نشستوں پر 284 امیدواروں کے درمیان مقابلہ ہے۔ان میں صرف 28 خواتین امیداوارہیں۔ باقی 15 نشستوں پرطاقتورامیرقطر شیخ تمیم بن حمد آل ثانی ارکان کو نامزدکریں گے۔

انتخابات کے لیے اس ننھی خلیجی ریاست میں مختلف پولنگ اسٹیشن بنائے گئے ہیں۔دارالحکومت دوحہ کے علاقےعنیزہ میں واقع جوان بن جاسم اسکول میں قائم ایک پولنگ اسٹیشن پرقطری شہریوں نے اپنا حق رائے دہی استعمال کیا۔انھوں نے پہلے رجسٹریشن ڈیسک پر ووٹ ڈالنے کے لیے دست خط کیے۔پھر اپنا ووٹ ایک نیم شفاف پلاسٹک کے ڈبے میں ڈالا۔اس ڈبے پرقطرکے قومی درخت کھجور اورتلواروں پرمبنی نشان تھا۔

قطریوں کی کل آبادی قریباً 333,000 ہے لیکن صرف ان لوگوں کی نسلیں ووٹ ڈالنے اور انتخاب لڑنے کی اہل ہیں جو 1930 میں قطر کے شہری تھے۔اس کے بعد سے قطر کی شہریت حاصل کرنے والےافراد ووٹ ڈالنے یا انتخاب لڑنے کے اہل نہیں ہیں۔