برطانوی وزیراعظم کے خصوصی ایلچی کی افغانستان میں طالبان قیادت سے ملاقات

انسانی بحران سے نمٹنے ،افغانستان کو دہشت گردوں کی تربیت گاہ بننے سے روکنے اورخواتین کے حقوق سے متعلق امور پر تبادلہ خیال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

برطانوی وزیراعظم بورس جانسن کے خصوصی ایلچی برائے افغانستان نے طالبان قیادت سے ملاقات کی ہے اور ان سے انسانی بحران اور ملک کو جنگجوؤں کی تربیت گاہ بننے سے روکنے کے طریقوں پر تبادلہ خیال کیا ہے۔

برطانوی دفترخارجہ کے ایک بیان کے مطابق بورس جانسن کے اعلیٰ نمایندہ برائے افغانستان سائمن گاس نے کابل میں طالبان کے لیڈروں امیرخان متقی ، ملّاعبدالغنی برادر اور عبدالسلام حنفی سے ملاقات کی ہے۔

بیان کے مطابق انھوں نے افغانستان میں جاری انسانی بحران سے نمٹنے میں برطانیہ کی جانب سے ممکنہ امداد،ملک کو دہشت گردی کی تربیت گاہ بننے سے روکنے کے طریقوں اور بیرون ملک جانے کے خواہاں افراد کو محفوظ راستہ دینے کا سلسلہ جاری رکھنے کی ضرورت کے بارے میں تبادلہ خیال کیا ہے۔

’’انھوں نے اقلیتوں کے ساتھ سلوک اور خواتین اور لڑکیوں کے حقوق سے متعلق امور پر بھی بات چیت کی ہے۔‘‘سائمن گاس کے ساتھ اس ملاقات میں دوحہ میں افغانستان میں برطانوی مشن کے ناظم الامور بھی موجود تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں