.

آسٹریلیا کا امریکا سے98۰5 کروڑڈالرمالیت کادفاعی سودا؛12 فوجی ہیلی کاپٹرخرید کرے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کے محکمہ خارجہ نے 98۰5 کروڑ ڈالر مالیت کے معاہدے کے تحت آسٹریلیا کو 12 ایم ایچ-60 آر ملٹی مشن سی ہاک ہیلی کاپٹروں کی ممکنہ فروخت کے سودے کی منظوری دے دی ہے۔

امریکا کے محکمہ دفاع پینٹاگون نے ہفتے کے روز اس دفاعی سودے کی منظوری کی اطلاع دی ہے اور کہا ہے کہ ہیلی کاپٹروں کی مجوزہ فروخت سے آسٹریلیا کی سطح سمندر پر اور آبدوز مخالف جنگی مشن انجام دینے کی صلاحیت میں بہتری آئے گی۔اس کے ساتھ ساتھ اس کی تلاش، تحفظ اور مواصلاتی ریلے سمیت ثانوی مشن انجام دینے کی صلاحیت بھی بہتر ہو جائے گی۔

امریکا نے گذشتہ ماہ آسٹریلیا کے ساتھ آبدوزیں فروخت کرنے کا بھی معاہدہ کیا تھا۔اس پر فرانس نے سخت ردعمل کا اظہار کیا تھا۔ اس تناظر میں اب ایک حساس وقت میں یہ دفاعی سودا سامنے آیا ہے۔ آبدوزوں کے معاہدے کی وجہ سے فرانس کو کینبرا کے ساتھ اربوں ڈالرکا معاہدہ ختم کرنا پڑا تھا۔

امریکا اور برطانیہ نے 15ستمبر کو ایک نئے ’ہند بحرالکاہل سکیورٹی اتحاد ‘کا اعلان کیا تھا جو آسٹریلیا کو جوہری طاقت سے چلنے والی آبدوزوں سے لیس کرے گا۔ اس معاہدے کو خطے میں چین کے بڑھتے ہوئے اثر ورسوخ کا مقابلہ کرنے کے اقدام کے طورپر دیکھا جا رہا ہے۔

اس کے بعد آسٹریلیا نے فرانس کے ساتھ 12روایتی ڈیزل الیکٹرک آبدوزیں بنانے کا معاہدہ ختم کر دیا تھا۔ دونوں ملکوں کے درمیان اربوں ڈالر مالیت کا یہ معاہدہ 2016 میں طے پایا تھا۔

آسٹریلیا کو ہیلی کاپٹروں کی فروخت اس سال اس کی امریکا سے فوجی ساز وسامان کی خریداری کے سلسلے ہی کی کڑی ہے۔جون میں آسٹریلیا نے امریکا سے 29 بوئنگ اے ایچ-64 ای اپاچی اٹیک ہیلی کاپٹر خرید کیے تھے۔ ان کی مالیت 3.5 ارب ڈالر تک تھی۔

اس سے قبل اپریل میں آسٹریلیا نے امریکا سے قریباً 1.6 ارب ڈالر مالیت کے 12 ایم کیو -9 بی ڈرونز اور متعلقہ آلات خرید کیے تھے۔ ان کے علاوہ اتنی ہی ایک ارب 60 ڈالر مالیت سے ٹینک اور بھاری بکتر بند جنگی گاڑیاں خرید کی تھیں اور چار سی ایچ 47 ایف کارگو ہیلی کاپٹر 25 کروڑ 90 لاکھ ڈالر میں خریدے تھے۔