.
افغانستان وطالبان

کابل : طالبان جنگجو مشہور تفریح گاہ میں کھیلوں سے لطف اندوز ہونے لگے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

افغانستان میں تحریک طالبان کے عناصر کی نئی تصاویر سامنے آئی ہیں جن میں وہ لڑائی کے محاذوں یا چیک پوائنٹس سے دور نظر آ رہے ہیں۔

ان تصاویر میں طالبان عناصر چھٹی والے روز دارالحکومت کابل میں ایک مشہور تفریح گاہ میں لطف اندوز ہوتے دکھائی دے رہے ہیں۔ سیکڑوں طالبان کاندھوں پر خود کار بندوقوں کے ساتھ تفریح گاہ میں گھومتے پھرتے نظر آئے۔

اگرچہ طالبان قیادت کی جانب سے اپنے عناصر پر زور دیا گیا تھا کہ وہ اپنی اس نوعیت کی سرگرمیوں کی تصاویر جاری نہ کریں تاہم گذشتہ روز طالبان جنگجو تصاویر میں چھٹی والے دن سے لطف اندوز ہوتے نظر آئے۔

وسطی افغانستان سے تعلق رکھنے والے ایک 24 سالہ طالبان جنگجو حلیمی نے روئٹرز نیوز ایجنسی کو بتایا کہ "میں کابل آنے پر بہت خوش ہوں ،،، یہاں میرے ساتھیوں نے بھائیوں جیسی محبت کے ساتھ میرا استقبال کیا .... ہمیں فخر ہے کیوں کہ ہم جنگ لڑے مگر اب امریکی جا چکے ہیں اور یہ ہمیں سب سے زیادہ خوشی دینے والی بات ہے"۔

ایک اور 25 سالہ طالبان جنگجو ضیاء الحق نے بھی اپنی بھرپور مسرت کا اظہار کیا۔ اس موقع پر دیگر جنگجو بھی تفریح گاہ کے جھولوں اور کھیلوں سے لطف اندوز ہو رہے تھے۔

تفریح گاہ میں موجودگی کے دوران میں کسی جنگجو نے اپنا ہتھیار نہیں اتارا۔ انہوں نے چائے پی اور پانی کی پٹی کے ساتھ موجود کیبنوں سے اسنیکس بھی خریدے۔

واضح رہے کہ طالبان تحریک کے جنگجوؤں کی ایک بڑٰی تعداد ایسی ہے جو 15 اگست کو کابل پر کنٹرول سے قبل افغان دارالحکومت نہیں آئی تھی۔ ان جنگجوؤں نے کئی برس غاروں ، پہاڑوں اور وادیوں میں روپوش رہ کر گزارے۔