.

لیبیا : ایک ہفتے کے اندر 520 شامی اجرتی جنگجوؤں کا کوچ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

گذشتہ ایک ہفتے سے بھی کم عرصے کے دوران میں لیبیا سے شام واپس آنے والے ترکی کے ہمنوا اجرتی جنگجوؤں کی تعداد 520 ہو چکی ہے۔ یہ پیش رفت لیبیا میں عسکری کمیٹی (5+5) کے ایک ورکنگ پلان پر اتفاق رائے کے چند روز بعد سامنے آئی ہے۔ اس پلان کے تحت لیبیا میں تمام اجرتی جنگجوؤں اور غیر ملکی افواج کا خروج بتدریج عمل میں آئے گا۔

شام میں انسانی حقوق کے گروپ المرصد نے ہفتے کے روز بتایا تھا کہ لیبیا میں موجود شامی اجرتی جنگجوؤں کا نیا دستہ واپسی شام کی سرزمین پہنچا ہے۔ اس دستے میں 100 افراد تھے جو ترکی کے راستے شام پہنچے۔

لیبیا میں اقوام متحدہ کے مشن کے مطابق عسکری کمیٹی (5+5) کا متفقہ پلان 23 اکتوبر 2020ء کو طے پائے گئے فائر بندی کے معاہدے اور سلامتی کونسل کی قرار دادوں 2570 اور2571 سے مطابقت رکھتا ہے۔

ادھر ترکی کی انٹیلی جنس نے شام سے اجرتی جنگجوؤں کو لیبیا بھیجنے کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے۔ ساتھ ہی ان افراد کو واپس شام بھیجا جا رہا ہے جن کے معاہدوں کی مدت ختم ہو گئی ہے اور وہ شام واپس جانے کے خواہش مند ہیں۔ تبدیلی کا یہ عمل باقاعدگی کے ساتھ جاری ہے۔

ترکی کی انٹیلی جنس نے شام میں اپنے ہمنوا گروپوں کی قیادت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اپنے عناصر کو مکمل طور پر تیار رکھیں تا کہ ضرورت پڑنے پر اجرتی جنگجوؤں کے نئے دستوں کو لیبیا بھیجا جا سکے۔