.

مصر : نوجوان اداکار ہراس اور آبرو ریزی کے الزامات کی لپیٹ میں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر میں نوجوان اداکار شادی خلف کو عدالت میں پیش کر دیا گیا ہے۔ فن کار پر جنسی ہراس کا الزام ہے اور ساتھ یہ کہ اس نے ایک تربیتی ورک شاپ میں 7 لڑکیوں کی آبرو ریزی کی کوشش کی۔

مقامی میڈیا کے مطابق اداکاروں کی انجمن کا کہنا ہے کہ وہ خلف کے گھرانے کے ساتھ رابطے میں ہے تا کہ واقعے اور الزامات کی مکمل تفصیلات معلوم کی جا سکے۔

متعدد لڑکیوں نے سوشل میڈیا پر اپنی پوسٹوں میں انکشاف کیا کہ شادی خلف کے ورکشاپ میں ڈرامے کی تربیت کے کورس کے دوران میں انہیں نوجوان فن کار کی جانب سے زبانی اور جسمانی طور سے ہراس کا نشانہ بنایا گیا۔

دوسری جانب شادی خلف نے اپنے ساتھ تحقیقات میں خود پر عائد الزامات کی تردید کی ہے۔ فن کار کا کہنا ہے کہ الزام عائد کرنے والی لڑکیوں نے اس کے خلاف سوشل میڈیا پر مہم چلائی ہے۔

یاد رہے کہ 13 اکتوبر 1977کو پیدا ہونے والا شادی نبیل خلف مصری شاعر اور وزارت داخلہ کے ساب عہدے دار نبیل خلف کا بیٹا ہے۔

وہ کئی فلموں میں اداکاری کے جوہر دکھا چکا ہے۔

قابل ذکر بات یہ ہے کہ چند برس قبل الجیزہ صوبے کی فوجداری عدالت نے شادی کے والد کو 3 برس قید اور ملازمت سے برطرفی کی سزا سنائی تھی۔ ساتھ ہی حکم دیا گیا تھا کہ نبیل خلف 6.21 لاکھ مصری پاؤنڈ کی رقم بھی واپس لوٹائے۔ نبیل پر وزارت داخلہ کی سرکاری رقم ہتھیانے کے الزام کے تحت مقدمہ چلایا گیا تھا۔