.
افغانستان وطالبان

کابل کے اس ہوٹل سے دُور رہیں : امریکا اور برطانیہ کا اپنے شہریوں کو انتباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا اور برطانیہ نے اپنے شہریوں پر زور دیا ہے کہ وہ افغان دارالحکومت میں واقع ہوٹلوں بالخصوص معروف ہوٹل "سرينا" سے دور ہیں۔

پیر کے روز جاری ایک بیان میں امریکی وزارت خارجہ نے ہدایت کی ہے کہ سرینا ہوٹل میں یا اس کے نزدیک موجود امریکی شہری فوری طور پر کوچ کر جائیں۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ علاقے میں سیکورٹی خطرات ہیں۔

ادھر برطانوی وزارت خارجہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ "افغان سرزمین پر بڑھتے ہوئے خطرات کے پیش نظر ہوٹلوں بالخصوص کابل کے سرینا ہوٹل میں نہ رہا جائے"۔

واضح رہے کہ سرینا ہوٹل کا شمار افغان دارالحکومت کے مشہور ترین ہوٹلوں میں ہوتا ہے۔ اگست کے وسط میں کابل کے طالبان کے ہاتھوں میں آنے سے قبل یہ ہوٹل غیر ملکیوں کے بیچ وسیع پیمانے پر مقبول تھا۔

گذشتہ برسوں کے دوران میں یہ ہوٹل دو مرتبہ شدت پسندوں کے حملوں کا ہدف بنا۔

واضح رہے کہ افغانستان سے غیر ملکی افواج کے کوچ سے چند روز قبل دارالحکومت کابل کے ہوائی اڈے اور ایک ہوٹل کے نزدیک دہرے خود کش دھماکوں کے نتیجے میں درجنوں شہری ہلاک ہو گئے تھے۔ حملے میں 13 امریکی فوجی بھی مارے گئے تھے۔ دھماکوں کی ذمے داری داعش تنظیم نے قبول کی تھی۔