.

قبرص میں اسرائیلی کاروباری شخصیت پرقاتلانہ حملے میں ملوث دوسرا ملزم گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

قبرص کے ذرائع ابلاغ نے بتایا ہے کہ ایک اسرائیلی کاروباری شخصیت پر قاتلانہ حملے میں مبینہ طورپر ملوث دوسرے ملزم کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔ اسرائیل کا دعویٰ ہے کہ اس کےایک تاجر پرحملے کے پیچھے ایران کا ہاتھ ہے۔

چند روز قبل اسرائیلی وزیر دفاع بینی گینٹز نے قبرص میں اسرائیلی مفادات پر ایران کی طرف سے جارحیت مسلط کرنے کی کوشش ناکام بنانے کا دعویٰ کیا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم اپنے شہریوں کی ہرجگہ پرحفاظت کریں گے۔

ٹویٹر پر پوسٹ کردہ ٹویٹس میں اسرائیلی وزیر دفاع نے کہا تھا کہ قبرص میں اسرائیلی مفادات پرحملوں کے پیچھے ایران کا ہاتھ ہے تاہم اسرائیل نے قبرص میں ایرانی جارحیت ناکام بنا دی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ’ایران اب بھی پوری دنیا، خطے اور اسرائیل کے لیے ایک چیلنج ہے۔ اسرائیل اپنے شہریوں اور ملکی مفادات کی حفاظت یقینی بنائے گا اور کسی بھی خطرے کا پوری قوت سے جواب دیا جائے گا‘۔

اسرائیل نے پوری دنیا میں اپنے سفارت خانوں کو ایران کے طرف سے ممکنہ طورپرخطرات کا الڑت جاری کیا تھا۔ یہ الرٹ اس وقت جاری کیا گیا جب قبرص میں ایک اسرائیلی کاروباری شخصیت پر مزعومہ قاتلانہ حملے میں ایک آذر بائیجانی ملزم کو گرفتار کیا گیا۔

عبرانی ٹی وی چینل 12 نے بتایا کہ اسرائیلی وزارت خارجہ نے دنیا بھر میں اپنے سفارت کاروں کو محتاط رہنے کی ہدایت کی گئی ہے۔

ٹی وی نیٹ ورک کےمطابق قبرص میں تین مشتبہ ملزمان نے اسرائیلی تاجر پرحملہ کیا۔ رواں ہفتے ان میں سے ایک ملزم کی نشاندہی کی گئی تھی۔ ان میں سے ایک ملزم قبرص سے فرار ہوگیا تھا تاہم ٹی وی چینل نے اس کی مزید تفصیل بیان نہیں کی۔

آذربائیجان کی پولیس نے اسرائیلی کاروباری شخصیات پرحملوں کی منصوبہ بندی کے شبے میں ایک شخص کو گرفتار کیا تھا۔ قبرصی حکام کا کہنا ہے کہ ملزم پر گیارہ مختلف الزامات کے تحت تحقیقات کی جا رہی ہیں۔ ان میں دہشت گردانہ سرگرمیوں میں حصہ لینے، اقدام قتل، مجرمانہ گروپ سے تعلق، جرائم کے ارتکاب، ملک میں غیرقانونی قیام اور دیگر الزامات شامل ہیں۔