.

ہیٹی میں بچوں سمیت 17 امریکیوں کا اغوا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ہیٹی میں ایک مسلح گینگ نے مبینہ طورپر17امریکیوں کو اغوا کرلیا ہے۔ اغوا ہونے والوں میں عیسائی مشنریوں کے خاندان کے افراد اور بچے بھی شامل ہیں۔ ان لوگوں کو ہیٹی کے دارالحکومت پورٹ اوپرنس سے کل ہفتے کے روز اغوا کیا گیا تھا۔ پولیس نے مغوی امریکیوں کی تلاش شروع کردی ہے۔

نیویارک ٹائمز اور "سی این این" کے مطابق امریکیوں کے اغوا کا واقعہ اس وقت پیش آیا جب مشنری یتیم خانوں کی جانب روانہ ہوگئے تھے۔

واشنگٹن پوسٹ نے ’اوہایو‘ میں عیسائی امدادی ادارے کے ایک صوتی ریکارڈنگ کا حوالہ دیا ہے کہ ایک مسلح گروہ نے مردوں، عورتوں اور بچوں کے بعد گروپ کو اغوا کیا ہے۔

ریکارڈنگ میں بتایا گیا ہے کہ مشن فیلڈ ڈائریکٹر اور امریکی سفارت خانہ اغوا ہونے والے افراد کی بازیابی اور ان کی تلاش کے لیے مختلف پہلوؤں پر غور کر رہا ہے۔

"سی این این‘‘نے کہا ہے کہ ہیٹی میں سیکیورٹی فورسز کے مطابق اغواہونے والوں میں 14 بالغ اور تین بچے ہیں۔

نیویارک ٹائمز نے مقامی حکام کا حوالہ دیا ہے کہ مشنریوں کے خاندان کے افراد کو ہوائی اڈے کی طرف جانے والی بس سے اغوا کیا گیا

امریکی اسٹیٹ ڈیپارٹمنٹ کے ترجمان نے رائٹرز کو بتایا کہ انہیں ان رپورٹوں سے مطلع کیا گیا تھا، لیکن تفصیلات فراہم نہیں کی گئیں. ایک ای میل بیان نیں ترجمان نے کہا کہ بیرون ملک امریکی شہریوں کی حفاظت حکومت کی اولین ترجیح ہے۔

ہیٹی میں مسیحی امدادی تنظیم نے اس واقعے پر کوئی رد نہیں دیا۔