.

یمن : مارب کے جنوب میں گھمسان کی لڑائی ، العبدیہ میں حوثیوں کی جانب سے گرفتاری مہم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں زمینی ذرائع نے العربیہ اور الحدث نیوز چینل کو آج اتوار کے روز بتایا کہ حوثی ملیشیا مارب صوبے کے ضلع العبدیہ میں شہریوں کے خلاف وسیع پیمانے پر گرفتاریوں کی مہم چلا رہی ہے۔

ذرائع نے مزید بتایا کہ حوثی ملیشیا زخمیوں اور بچوں کو بھی گرفتار کر رہی ہے۔ اسی طرح وہ گھروں کو دھماکوں سے تباہ بھی کر رہی ہے۔ ذرائع کے مطابق مارب کے جنوبی محاذ پر گھمسان کی لڑائی ہو رہی ہے۔

العربیہ اور الحدث نیوز چینلوں کے نمائندے نے کل ہفتے کے روز بتایا تھا کہ حوثیوں نے گولہ باری کر کے چھ دیہات مکمل طور پر تباہ کر دیے۔ اس کے نتیجے میں العبدیہ ضلع کے دیہات سے غیر معمولی نوعیت کی نقل مکانی دیکھی جا رہی ہے۔

ادھر یمنی وزیر اطلاعات معمر الاریانی نے حوثی ملیشیا کو العبدیہ کے شہریوں کے خلاف وحشیانہ جرائم کے ارتکاب سے خبردار کیا ہے۔ انہوں نے مقامی ذرائع کے حوالے سے بتایا کہ حوثی ملیشیا زخمیوں کو موت کے گھاٹ اتار رہی ہے اور گھروں اور سرکاری عمارتوں کو دھماکوں سے تباہ کر رہی ہے۔

اپنی سلسلہ وار ٹویٹس میں یمنی وزیر نے کہا کہ حوثیوں نے العبدیہ ضلع میں دکانوں ، تجارتی مراکز اور ہسپتالوں میں لوٹ مار کی۔ اس دوران 18 دیہات کا محاصرہ اور ان پر گولہ باری جاری ہے۔

دوسری جانب امریکی وزارت خارجہ نے محصور ضلع العبدیہ میں انسانی امداد کے نہ پہنچنے کی مذمت کرتے ہوئے حوثیوں پر الزام عائد کیا ہے کہ وہ 35 ہزار یمنیوں تک امداد کے راستے میں رکاوٹ بنے ہوئے ہیں۔

وزارت نے ہفتے کے روز جاری ایک بیان میں حوثیوں سے مطالبہ کیا کہ وہ العبدیہ میں شہریوں اور زخمیوں کے واسطے محفوظ گزر گاہیں کھولیں۔ مزید یہ کہ مارب صوبے پر حملہ روک دیا جائے۔

یاد رہے کہ حوثی ملیشیا رواں سال فروری سے تزویراتی اہمیت کے حامل صوبے مارب پر حملے کر رہی ہے جو تیل کی دولت سے مالا مال ہے۔ البتہ مقامی قبائل اور یمنی فوج کی شدید مزاحمت کے باعث ایران نواز ملیشیا کی صوبے میں داخل ہونے کی کوشش ابھی تک کامیاب نہیں ہو سکی۔