.

حزب اللہ سے ممکنہ معرکے میں 2000 میزائل یومیہ کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے: اسرائیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی فوج کے ایک سینئر عہدیدار کا کہنا ہے کہ حزب اللہ کے ساتھ کسی بھی جنگ کی صورت میں اسرائیل کو ایک دن میں 2000 راکٹوں کا سامنا ہو سکتا ہے اور ایسی صورتحال کا مقابلہ کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

اسرائیلی فوج کے ہوم فرنٹ کمانڈ کے سربراہ اوری گورڈن کے مطابق ماہ مئی کے دوران غزہ سے اسرائیل کی جانب داغے جانے والے میزائلوں کی تعداد کہیں زیادہ تھی۔"

یاد رہے کہ مئی میں 11 دنوں کے دوران فلسطینی مزاحمتی گروپوں نے غزہ سے اسرائیل کی جانب 4400 راکٹ داغے تھے۔

اسرائیلی عہدیدار کے مطابق انہیں حزب اللہ سے کسی بھی ممکنہ لڑائی کے دوران ان میزائلوں سے پانچ گنا زیادہ میزائل داغے جانے کی توقع ہے۔

اوری گورڈن کے مطابق "مئی میں 11 روزہ جنگ کے دوران ہمیں ہر دن اوسطا 400 میزائلوں کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ اسی لئے ہم اندازا 1500 سے 2000 راکٹ یومیہ کے مقابلے کی تیاری رکھتے ہیں۔"