.

اسرائیل 4 ہزار فلسطینیوں کے مقامی آبادی کے طور پر اندراج پر آمادہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل کا کہنا ہے کہ وہ تقریبا 4000 فلسطینیوں کے مغربی کنارے میں بطور مقامی آبادی اندراج پر آمادہ ہو گیا ہے۔ یہ افراد کئی برسوں سے اسرائیل کے زیر کنٹرول اراضی پر بنا کسی سرکاری حیثیت کے زندگی گزار رہے ہیں۔

فلسطینی علاقوں میں اسرائیلی حکومت کے رابطہ کار یونٹ کے بیورو کے مطابق اس فیصلے کا اطلاق غزہ کی پٹی میں رہنے والے 2800 سابق مکینوں پر ہو گا جو 2007ء میں وہاں حماس کے کنٹرول کے بعد غزہ سے کوچ کر گئے تھے۔

اسی طرح مغربی کنارے کے 1200 فلسطینیوں کو بھی سرکاری حیثیت دی جائے گی۔ ان لوگوں کے پاس دستاویزات نہیں ہیں۔

اسرائیلی وزیر دفاع بینی گینٹز نے اپنی ٹویٹ میں کہا ہے کہ انہوں نے انسانی ہمدردی کے تحت 4000 فلسطینیوں کے اندراج کی منظوری دی ہے۔ اس کا مقصد مغربی کنارے میں فلسطینیوں کی معیشت کو مضبوط اور زندگی کو بہتر بنانا ہے۔

مغربی کنارے میں فلسطینی اتھارٹی کے سینئر ذمے دار حسین الشیخ کے مطابق 4000 فلسطینیوں کو فلسطینی شناخت دے دی گئی ہے۔ اب انہیں وطن کا باسی ہونے کا حق مل گیا ہے۔