.

سعودی عرب:12 سال سے کم عمرطلبہ کی جماعتوں میں حاضری پرعمل درآمد ملتوی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں وزارتِ تعلیم نے 12 سال سے کم عمرطلبہ کی جماعتوں میں ذاتی حیثیت میں تدریس کے لیے حاضری ملتوی کردی ہے۔

اس سے قبل وزارت نے 12 سال سے کم عمرطلبہ کی اسکولوں میں حاضری کے لیے 31 اکتوبر کی تاریخ مقرر کی تھی۔سعودی پریس ایجنسی کے مطابق وزارت تعلیم نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’اس زمرے کے طلبہ کی حاضری کو وبائی امراض کے خطرات سے متعلق مطالعات کی تکمیل تک ملتوی کردیا گیا ہے تاکہ ان کی اوران کے خاندانوں کی حفاظت اور صحت کو یقینی محفوظ بنایا جاسکے۔‘‘

وزارت تعلیم کے ترجمان نے واضح کیا ہے کہ اس عمرکےگروپ کے لیے فاصلاتی تدریس کا سلسلہ جاری رہےگا۔ان کا کہنا تھا کہ ’’کووِڈ-19 ویکسین کی دو خوراکیں لگوانے والے متوسط اور ثانوی درجوں کے طلبہ کی تدریس میں باقاعدگی تعلیم اور صحت کی وزارتوں کی مربوط کوششوں کا نتیجہ ہے۔وقایا ایپلی کیشن کی منظورشدہ احتیاطی تدابیراور صحت کے پروٹوکول پر عمل درآمد سے ان طلبہ وطالبات کی صحت کے تحفظ کو یقینی بنانے میں مدد ملی ہے۔

واضح رہے کہ سعودی وزارتِ تعلیم نے مملکت میں رواں تعلیمی سال میں کام کرنے والے اسکولوں کے لیے کووِڈ-19 کے تعلق سے عمومی رہ نما ہدایات جاری کی تھیں۔وزارت تعلیم نے وزارت صحت کے ساتھ مل کر یہ اعلان کیا تھاکہ تعلیمی سال شروع ہونے سے پہلے تمام طلبہ اور اسکولوں کے عملہ کے ارکان کومکمل ویکسین لگوانا ہوگی۔

ان رہ نما ہدایات میں کہا گیا تھا کہ اسکولوں کو سعودی وزارت صحت کی جانب سے جاری کردہ قواعدوضوابط پر عمل کرنا ہوگا اور طلبہ اور عملہ کے ارکان کوکووِڈ-19 سے بچاؤ کے لیے احتیاطی تدابیر کی پاسداری جاری رکھنی چاہیے۔ طلبہ کے عمارت میں داخل ہونے سے پہلے اورباہرنکلنے کے بعد جماعت کے کمروں کی جراثیم کش اسپرے سے تطہیر کی جانا چاہیے۔