.

سعودی عرب :پاسپورٹ سے منسلک شہریوں کے ڈیٹا کے لیے الیکٹرانک چپ متعارف کرانے کااعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب نے ایک الیکٹرانک چپ متعارف کرانے کا اعلان کیا ہے۔اس میں شہریوں کا ڈیٹا شامل ہوگا اور اسے ان کے پاسپورٹ سے منسلک کیا جائے گا۔اس اقدام کا مقصد مملکت میں مختلف خدمات کومربوط اورڈیجیٹل بنانے کے عمل میں سہولت پیدا کرنا ہے۔

سعودی وزارت داخلہ کے ایک ذریعے نے العربیہ کوبتایا کہ آیندہ چند ماہ میں ڈیجیٹل قومی شناخت متعارف کرائی جائے گی۔اس سے ڈیجیٹل ویزاجاری کرتے وقت بائیومیٹرک اور فنگرپرنٹ کی رجسٹریشن بھی دستیاب ہوگی اور لوگوں کواس مقصد کے لیے سفارت خانوں میں جانے کی ضرورت نہیں ہوگی۔

واضح رہے کہ سعودی عرب کے سرکاری اداروں کی ڈیجیٹل ایپلی کیشنز کے صارفین کی تعداد دوکروڑ چالیس لاکھ سے متجاوزہوچکی ہے۔ان میں سعودی شہری، مملکت میں مقیم تارکینِ وطن اورعمرہ وحج کے زائرین شامل ہیں۔

توکلنا ایپ

سعودی عرب میں زیراستعمال ایک اور ڈیجیٹل سروس کووِڈ-19 کا سراغ لگانے والی ایپ ’’توکلنا‘‘ ہے۔

سعودی پریس ایجنسی (ایس پی اے) کے مطابق مملکت میں ایک کروڑ 70 لاکھ سے زیادہ افراد نے اب تک توکلنا ایپ کا استعمال کیا ہے کیونکہ یہ وزارتِ صحت کی جانب سے کروناوائرس کے پھیلاؤ کو محدود کرنے کے لیے منظورشدہ سرکاری ایپ ہے۔اس ایپ کوکووِڈ-19 سے متعلق ریکارڈ کی جانچ کے لیے استعمال کیا جارہا ہے۔

سعودی وزارت صحت نے گذشتہ سال مئی میں کرونا وائرس کی وبا کے عروج کے دنوں میں توکلنا ایپ متعارف کرائی تھی۔اس کا ابتدا میں مقصد مملکت کے شہروں میں کرفیو کے نفاذ کی نگرانی کرنا تھا۔کرفیو کے اوقات میں سرکاری اور نجی اداروں کے ملازمین کو نقل وحرکت کے لیے اسی ایپ کے ذریعے اجازت نامے جاری کیے جاتے تھے۔

یہ ایپلی کیشن وزارت صحت اور سعودی ڈیٹا اور مصنوعی ذہانت اتھارٹی (سدایا) کے باہمی اشتراک سے تیار کی گئی تھی۔