.

شیخ الازھرکے نومبر میں دورہ عراق میں آیت اللہ علی السیستانی ملاقات متوقع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصرکی سب سے بڑی دینی درس گاہ جامعہ الازھر سربراہ ڈاکٹر احمد الطیب آئندہ ماہ [نومبر] میں عراق کا سرکاری دورہ کررہے ہیں۔ شیخ الازھر کے دورہ عراق کے علان کے بد عراقی عوام ، حکومتی اور مذہبی حلقے اس دورے کا انتظار کر رہے ہیں۔ توقع ہے کہ اپنے اس دورے میں وہ عراق کے وزیراعظم سے ملاقات کریں گے۔ انہیں عراق کے موجودہ وزیراعظم مصطفیٰ الکاظمی کی طرف سے براہ راست بغداد کے دورے کی دعوت دی گئی تھی۔ وہ عراق کے ممتاز شیعہ رہ نما آیت اللہ علی السیستانی سے بھی ملاقات کریں گے۔

ڈاکٹر جواد الخوئی
ڈاکٹر جواد الخوئی

العربیہ ڈاٹ نیٹ نے الخوئی انسٹی ٹیوٹ کے سیکرٹری جنرل ڈاکٹر جواد الخوئی کا ایک انٹرویو کیا تھا۔ جواد الخوئی نے 8 مئی کو انکشاف کیا کہ ڈاکٹر احمد الطیب نجف جو کہ "علمی مدرسہ" کے صدر مقام ہے کا دورہ کریں گے۔ ان کا کہنا ہے کہ میڈیا کی نظروں سے ہٹ کرشیخ الازہر احمد الطیب علی السیستانی سے بھی ملاقات کریں گے۔ ایک مصدقہ خصوصی ذریعے کا کہنا ہے کہ شیخ الازھر اور علی السیستانی کےدرمیان ملاقات کے لیے ان کی مقرب شخصیات کے درمیان رابطے جاری ہیں۔

اعتدال پسندی کا فروغ

ڈاکٹر احمد الطیب کا آئندہ دورہ عراق اور مشرق وسطیٰ میں استحکام کی کوششوں کی حمایت، فرقہ وارانہ کشیدگی کو کم کرنے اور اس بات پر زور دینے کے تناظر میں آیا ہے کہ ایک ایسا دھارا موجود ہے جو "اسلامی اعتدال پسندی" کی نمائندگی کرتا ہے۔ ایک وسیع انسانی افق کے لیے کھلے پن کے ساتھ اسلامی نظریاتی مکالمے کے دور سے آگے نکلنا چاہتا ہے۔

شیخ الازھر کی ڈاکٹراحمد الطیب کی علی السیستانی سے ملاقات امارات کے دارالحکومت ابو ظبی میں 2019ء میں السیستانی اور پاپائے روم کے درمیان ہونے والی ملاقات، اسلامی بھائی چارے کی روح کو فروغ دینے اور پوپ فرانسس کے گذشتہ مارچ میں دورہ عراق کا تسلسل ہے۔

عراقی حکومت اپنی طرف سےکسی بھی فرقہ وارانہ فریم ورک سے بالاتر ہونے کی کوشش کرتی ہےتاہم اسے کچھ لوگ بدنام کرنے کی خواہش رکھتے ہیں۔ ایک باخبر ذریعے کے مطابق یہ کسی سنی رہ نما کا عراق کے سنیوں کے لیے دورہ نہیں ہےبلکہ ایک عرب رہ نما کا دورہ ہے۔ جسے تمام مذاہب، فرقے اور نسلوں سے تعلق رکھنے والے تمام عراقی قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔ دورے کے ایجنڈے میں بغداد، موصل، نجف اور اربیل سمیت کئی مقامات کا دورہ شامل ہے۔ ذرائع نے مزید کہا کہ دوسرے شہروں کے دورے ہو سکتے ہیں جن کے شیڈول جاری نہیں کیا گیا۔ حتمی شیڈول کا ابھی باقی ہے اور اسے مکمل کرنے کے لیے انتظامات جاری ہیں۔

اسی ذریعے کا خیال ہے کہ شیخ الازہر کی آمد اسلامی اعتدال پسندی کے نقطہ نظر کو مضبوط کرتی ہے جو سیاسی اسلام اور فرقہ واریت سے بالاتر شخصیت ہے۔ ڈاکٹر احمد الطیب اور علی السیستانی جیسے مرجع کی ملاقات اہمیت کی حامل ہے۔ دونون رہ نما معتدل سوچ رکھتے ہیں۔ احمد الطیب اور علی السیستانی جیسے دونوں روحانی پیشواؤں کے درمیان ملاقات مثبت پیغامات دے گی جو جنون، نفرت اور تکفیری فتاویٰ سے گریز کی تلقین کرتے رہے ہیں۔

عراقی فقہ کونسل الازہر شیخ الازھرکے استقبال اورملاقاتوں میں بھی موجود رہے گی۔ ڈاکٹر احمد الطیب کے عراق میں مسجد امام الاعظم کے دورے کا بھی امکان ہے۔

نجف کی تیاریاں

21 اکتوبر بروز جمعرات امام الخوئی پبلک لائبریری اور دار العلم اسکول نے جامعہ الازہر کے شعبہ گریجویٹ اسٹڈیز کے سربراہ پروفیسر ڈاکٹر محمد سالم (ابو عاصی) ڈاکٹر عراق میں علما کونسل کے صدر شیخ حامد عبدالعزیز الحمد کے ہمراہ "امام الخوئی پبلک لائبریری" کا دورہ کیا۔

وفد نے "الخوئی انسٹی ٹیوٹ" کے سیکرٹری جنرل جواد الخوئی سے ملاقات کی جہاں انہوں نے اتحاد اور تعاون، پرامن بقائے باہمی، اور اختلاف و تفرقہ کو مسترد کرنے پر زور دیا۔