.

مصر میں لوگوں کو نماز کی طرف بلاتے بلاتے مؤذن خود جنت سدھار گیا

حسن خاتمہ: اذان دیتے ہوئے مؤذن حی علی الصلوٰۃ پر پہنچا تو روح پرواز کر گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر میں فجر کی اذان دیتے ہوئے ایک بزرگ مؤذن کے اچانک انتقال کی خبر نے ہر طرف صدمے کا ماحول پیدا کر دیا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق المنوفیہ گورنری میں الباجور مرکز کے علاقے میں ایک بزرگ مؤذن الحاج حسنی نماز فجر کی اذان دیتے ہوئے ’حی علی الصلواۃ‘ کے الفاظ پر رک گئے اور بقیہ اذان مکمل نہیں کی۔ معلوم کرنے پر پتا چلا کہ ان کی روح پرواز کر چکی تھی۔

مقامی شہریوں کا کہنا ہے کہ الحاج حسنی ایک خوش اخلاق اور حسن خلاق کی حامل شخصیت تھے۔

ان نے بیٹے محمود حسنی نے بتایا کہ ان کے والد کئی سال سے قریبی مسجد میں رضا کارانہ طورپر اذان دیتے تھے۔ وہ نہ صرف خود بھی نماز کے پابند تھے بلکہ وہ دوسروں کو بھی اس کی تلقین کرتے تھے۔

محمود نے بتایا کہ معمول کے مطابق وہ فجر کی نماز کی اذان کے لیے گھر سے وضو کرکے نکلے۔ انہوں نے اذان شروع کی۔ جب وہ ’حی علی الصلوۃ‘ پر پہنچے تو اس کے بعد خاموشی چھا گئی۔ ہم لوگ مسجد کی طرف دوڑے تاکہ اذان ادھوری رہنے کا سبب معلوم کریں۔

ہم مسجد میں داخل ہوئے تو والد صاحب قبلہ رخ ہوکر مسجد کے فرش پر لیٹے ہوئے تھے اور ان کی روح پرواز کر چکی تھی۔
ایک سوال کے جواب میں محمود نے بتایا کہ ان کے والد کو جگر میں تکلیف تھی مگر انہوں نے اس کی کبھی شکایت نہیں کی۔