.

طالبان سربراہ ملا ہبت اللہ اخوند زادہ کی پہلی مرتبہ عوامی تقریب میں شرکت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

افغانستان میں طالبان تحریک کے ذمے داران کے مطابق تحریک کے سپریم کمانڈر ملا ہبت الله اخوند زادہ نے ہفتے کی شام قندھار میں ایک تقریب میں شرکت کی۔ واضح رہے کہ 2016ء میں اپنے تقرر کے بعد سے وہ کسی بھی موقع پر سرکاری طور سے منظر عام پر نہیں آئے تھے۔

طالبان حکومت نے اتوار کے روز ایک پیغام میں بتایا کہ ہبۃ اللہ اخوند زادہ قندھار کے معروف دینی مدرسے دارالعلوم الحکیمیہ میں لوگوں کے ایک بڑے مجمع میں ظاہر ہوئے۔ انہوں نے دس منٹ تک طلبہ اور سپاہیوں سے گفتگو کی۔

افغان ذمے داران نے اپنے سوشل میڈیا اکاؤنٹس پر اس حوالے سے ایک آڈیو ریکارڈنگ بھی پوسٹ کی ہے۔ ریکارڈنگ میں ملا اخوند زادہ کی آواز غیر واضح طور پر سنائی دے رہی ہے جس میں وہ دعائیں مانگ رہے ہیں۔

طالبان سپریم کمانڈر دو گاڑیوں کے ساتھ سخت پہرے میں مذکورہ مدرسے پہنچے تھے۔ اس موقع پر ان کی تصاویر لینے کی اجازت بھی نہیں دی گئی۔

اس سے قبل طالبان ترجمان بلال کریمی یہ بتا چکے تھے کہ ہبۃ اللہ اخوند زادہ افغانستان بالخصوص قندھار شہر میں موجود ہیں اور وہ جلد ہی علانیہ طور پر سامنے آئیں گے۔

اخوند زادہ کی یومیہ ذمے داریوں کے بارے میں زیادہ جان کاری نہیں ہے۔ اس لیے کہ ان کی علانیہ موجودگی بڑی حد تک عیدوں کے تہوار پر سالانہ پیغامات جاری کرنے تک محدود ہے۔