.

مصر : ساتھی کو بغدے سے ذبح کر کے مقتول کا سر ہاتھ میں لیے گھومتا رہا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سوشل میڈیا پر زیر گردش ایک بھیانک جرم کی وڈیو نے مصر کے لوگوں کو ہلا کر رکھ دیا ہے۔ وڈیو میں سڑک کے بیچ ایک نوجوان کو دیکھا جا سکتا ہے جس نے اپنے ساتھی پر تیز دھار آلے (بُغدے) سے پے درپے وار کیے اور پھر اس کا سر کاٹ کر سڑک پر ہاتھ میں لیے گھومنے پھرنے لگا۔ اس دوران میں اطراف میں موجود راہ گیر اس خونی منظر کو دیکھ کر ہذیانی کیفیت میں چیختے چلاتے رہے۔

یہ واقعہ مصر کے شہر اسماعیلیہ میں پیش آیا۔ واقعے کی اطلاع ملتے ہی سیکورٹی ادارے کے اہل کار جائے وقوع پر پہنچ گئے اور علاقے کو گھیرے میں لے لیا۔ مجرم کو اسی مقام سے گرفتار کر لیا گیا۔

ابتدائی تحقیقات کے مطابق یہ کارروائی قاتل کی جانب سے انتقاما کی گئی۔ اس کی وجہ مقتول کا قاتل کی والدہ کے ساتھ ناجائز تعلق تھا۔ سیکورٹی ادارے اس کارروائی کی اصل وجہ جاننے کے لیے سرگرم ہیں۔

سیکورٹی ذرائع کے مطابق قاتل کا نام محمد الصادق ہے۔ اس کی عمر 42 برس ہے اور وہ اسماعیلیہ شہر کا ہی رہائشی ہے۔

دوسری جانب وزارت داخلہ نے ایک بیان میں باور کرایا ہے کہ قاتل نفسیاتی بیمار ہے اور ماضی میں وہ منشیات کے علاج کے ایک مرکز میں مقیم رہ چکا ہے۔