.

گلاسگو موسمیاتی سمٹ کے دوران جوبائیڈن "سو گئے": ویڈیو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

گلاسکو میں موسمیاتی تبدیلیوں کے حوالے سے ہونے والے عالمی سربراہ اجلاس میں شرکت کے موقع پر امریکی صدرجوبائیڈن کو سوتے پایا گیا۔ اجلاس کی ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر پوسٹ کی گئی ہے جس میں صدر جوبائیڈن کو سوتے دیکھا جا سکتا ہے۔

موسمیاتی تبدیلی سمٹ (COP 26) پیر کو اسکاٹ لینڈ کے شہر گلاسگو میں شروع ہوئی۔ یہ کانفرنس 12 نومبر تک جاری رہے گی۔ اقوام متحدہ کے فریم ورک کنونشن آن کلائمیٹ چینج (UNFCC) کے زیراہتمام 26ویں سالانہ اجلاس میں دنیا بھر کی 26 ہزار اہم شخصیات شرکت کریں گی۔

امریکی صدر جو بائیڈن نے سمٹ کے پہلے سیشن سے خطاب میں کہا کہ موسمیاتی بحران کو روکنے کے لیے جس وسیع ردعمل کی ضرورت ہے اسے دنیا کی معیشتوں کے لیے ایک موقع کے طور پر دیکھا جانا چاہیے۔

بائیڈن نے کہا کہ بڑھتی ہوئی تباہی کے درمیان میں نہ صرف امریکا بلکہ ہم سب کے لیے ایک شاندار موقع دیکھ رہا ہوں۔

کلائمیٹ سمٹ میں نہ صرف 190 سے زائد ممالک کی حکومتوں کو مدعو کیا گیا ہے بلکہ رسمی گفت و شنید کے علاوہ نمائشیں اور مباحثے بھی کیے جائیں گے۔جن میں کمپنیوں اور این جی اوز کے ہزاروں نمائندے شامل ہوں گے۔ بین الحکومتی پینل آن کلائمیٹ چینج، IPCC کی اگست کی رپورٹ کے مطابق اس سال کا کلائی میٹ سمٹ ایسے وقت میں ہو رہی ہے جب انسانیت ایک ایسے دوراہے پر کھڑی ہے کہ اس کی سمت واضح نہیں۔ آب و ہوا کی تبدیلی شدت اختیار کر رہی ہے اور کرہ ارض کے تمام خطوں کو متاثر کر رہی ہے۔ ۔

سال 2021 میں سیلاب، گرمی کی لہروں، سمندری طوفانوں اور جنگل کی آگ سے سینکڑوں افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں۔ ایسے واقعات کے بارے میں سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ یہ موسمیاتی تبدیلیوں کا نتیجہ ہیں اور ان میں مزید شدت آسکتی ہے۔

"1.5" سب سے اہم نمبر کیوں ہے؟

بنیادی مقصد کرہ ارض کے درجہ حرارت کو انیسویں صدی یا قبل از صنعتی دور کے مقابلے میں 1.5 ڈگری سیلسیس سے بڑھنے سے روکنا ہے۔ اس کے لیے کاربن ڈائی آکسائیڈ کے اخراج میں سخت اور فوری کمی کی ضرورت ہے، جو جیواشم ایندھن کو جلانے سے گرین ہاؤس گیسیں پیدا کرتی ہیں۔

اگست میں جاری ’آئی پی سی سی‘ کی رپورٹ کے مطابق سیارہ پہلے ہی اوسطاً 1.1 ڈگری گرم ہو چکا ہے۔

پیرس معاہدے میں جو 2015 میں COP21 میں اپنایا گیا تھا دنیا کے بیشتر ممالک نے اوسط عالمی درجہ حرارت میں اضافے کو صنعت سے پہلے کی سطح کو 2 ° C سے کم رکھنے اور درجہ حرارت میں اضافے کو 1.5 ڈگری سینٹی گریڈ تک رکھنے کا عہد کیا تھا۔