.

مصر اور اسرائیل کے بیچ "کیمپ ڈیوڈ" امن معاہدے میں ترمیم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل نے پیر کے روز اعلان کیا ہے کہ قاہرہ اور تل ابیب کے بیچ 1979ء میں طے پانے والے کیمپ ڈیوڈ معاہدے میں ترمیم پر دستخط کر دیے گئے ہیں۔ اس ترمیم کے نتیجے میں رفح کے علاقے (یہ زون سی میں شمار ہوتا ہے) میں سرحدی فورسز کی موجودگی ممکن ہو سکے گی۔ اس کا مقصد وہاں مصری فوج کی موجودگی کو تقویت پہنچانا ہے۔

اسرائیلی فوج کے ترجمان افیخائی ادرعی نے اپنی ٹویٹ میں بتایا کہ اتوار کے روز اسرائیلی اور مصری افواج کی مشترکہ عسکری کمیٹی کا اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس میں دونوں افواج کے بیچ دو طرفہ معاملات زیر بحث آئے۔ علاوہ ازیں مذکورہ سمجھوتے (امن سمجھوتے) میں ترمیم پر بھی دستخط کیے گئے۔

ادرعی نے مزید بتایا کہ سمجھوتے میں ترمیم کی منظوری سیاسی سطح پر دی گئی۔

قاہرہ کی جانب سے اسرائیلی اعلان کے بعد کوئی تبصرہ سامنے نہیں آیا ہے۔ واضح رہے کہ مصری سیکورٹی ذمے داران اور سیاست دانوں کی جانب سے آخری چند برسوں سے اس بات پر مسلسل زور دیا جا رہا تھا کہ امن معاہدے کی بعض شقوں میں ترمیم کی ضرورت ہے۔ اس کا مقصد سرحد کے متوازی علاقوں میں مزید عسکری تعیناتی کو ممکن بنانا تھا۔ ان علاقوں میں شدت پسند جماعتوں کا پھیلاؤ اور دہشت گردی کی کارروائیاں دیکھی جا رہی تھیں۔

مصر اور اسرائیل کے درمیان کیمپ ڈیوڈ امن معاہدے پر 26 مارچ 1979ء کو دستخط ہوئے تھے۔ یہ معاہدہ جزیرہ نما سیناء کو تین زون (A,B,C) میں تقسیم کرتا ہے۔ معاہدے کی رُو سے مصر زون C میں لڑاکا طیارے اور بھاری اسلحہ داخل نہیں کر سکتا۔ یہ زون اسرائیل کی سرحد سے ملحق ہے۔ اس زون میں 750 سے زیادہ مصری فوجی تعینات نہیں کیے جا سکتے۔ تاہم معاہدے کی ایک شق اس بات کی اجازت دیتی ہے کہ کسی ایک فریق کی درخواست پر جانبین کے اتفاق رائے سے سیکورٹی انتظامات عمل میں لائے جا سکتے ہیں۔ تل ابیب کئی برس سے اس بات پر آمادہ تھا کہ سیناء میں مصری فورسز کی تعداد میں اضافہ کیا جائے۔ یہ اقدام وہاں دہشت گرد تنظیموں کے خلاف قاہرہ کے عسکری آپریشن کے ضمن میں ہے۔

عسکری مبصرین کے مطابق مصر اور اسرائیل کے بیچ امن معاہدے میں ترمیم کی اہمیت دہشت گردی اور شدت پسندی کے انسداد اور خطے میں امن و استحکام کو یقینی بنانے کے سلسلے میں ضروری اور باقی رہے گی۔

دوسری جانب اسرائیلی اخبار "یدیعوت احرونوت" کے مطابق تل ابیب پہلے ہی ایک سے زیادہ مواقع پر اس بات پر آمادہ ہو چکا تھا کہ زون C میں مصر اپنی فورسز کی تعداد میں اضافہ کرے۔ اسرائیل کو سمجھوتے کی متعلقہ شق میں ترمیم پر اعتراض نہیں رہا۔