.

سعودی عرب کی 50 بااثرترین خواتین کی فہرست میں کون کون شامل ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے وژن 2030 پروگرام کی بدولت سعودی خواتین نے گذشتہ چند سال کے دوران میں معاشی، سماجی اور انسانی شعبوں میں بڑی کامیابیاں حاصل کی ہیں۔اس ویژن کے تحت سعودی عرب میں کی جانے والی اصلاحات کے تحت خواتین کوبااختیار بنایا جارہا ہے اورافرادی قوت میں ان کی شمولیت میں اضافہ کیا جارہا ہے۔

عرب بزنس کی شائع کردہ ایک فہرست کے مطابق سعودی عرب کی 50 بااثر ترین خواتین اپنی کامیابیوں کی بنا پر’رول ماڈل‘ کا کردار ادا کررہی ہیں۔

متحدہ عرب امارات کے شہر دبئی سے شائع ہونے والے ہفت روزہ کاروباری میگزین عرب بزنس کے مطابق ’’ہم سعودی خواتین اور ان کی کامیابیوں کے ساتھ کسی فہرست میں انصاف نہیں کرسکتے۔‘‘

سعودی عرب کے وژن 2030 میں بتایا گیا ہے کہ مستقبل کی ترقی پذیر معیشت کو فعال بنانے کے لیے روزگار کے مواقع بڑھانے کی ضرورت ہوگی۔اس مقصد کے لیے اس بات کو یقینی بنایا جائے گا کہ خواتین کو مزید ملازمتیں دستیاب ہوں۔

سعودی عرب کی معیشت کو متنوع اور پائیدار بنانے کی حکمت عملی کے تحت باصلاحیت، تعلیم یافتہ خواتین کو ملازمتیں دی جارہی ہیں اور انھیں مملکت کی افرادی قوت میں نمایاں کردارسونپا جارہا ہے۔

بزنس میگزین کے مطابق سعودی عرب کی 50 بااثرترین خواتین کے نام یہ ہیں:

• اسماءالجویب

• افنان الشویبی

• علاء الریف

• امل عسیری

• ایمن عبدالعظیم

• بسمہ المیمان

• بیان الصدیق

• بیان زہران

• تمارا القابانی

• حسنہ الاوفی

• حنان السماری

حیات سندی •

• خولودالعطار

• خولہ الکورایہ

• حنان السماری

• دانیا ارکوبی

• دانیا عقیل

• دینا مدنی

• رابعہ العوثیم

• رانیاالترکی

• رانیا ناشر

• رشاالحوشان

• رانیم بغدو

• رحا المحارق

• ریم ترکی

• شہزادی ریما بنت بندر

• سارہ الجعشی

• ساریہ عبدین

• سمیہ السلیمان

• شہدالجیفری

• شین حمید

• شیحانہ الاعزاز

• غدا المطاری

• غندورہ شمس الغندورہ

• فاطمۃ القدیحی

• فاطمہ باتوق

• لبنیٰ الاولیان

• لوجین ابوالفراج

• لولواالحمود

• لیناالمعینا

• مریم فکتیشلو

مریم موسیلی •

• منا الثقفی

• نوجود الکریثی

• نوجود الملیک

• نہلہ المعشوق

• نوال الجوینی

• شہزادی نورا الفیصل

• حیفااللیل

• حیفا المنصور