.

سعودی عرب کی شہریت حاصل کرنے والی پانچ ممتاز شخصیات؛مختصر تعارف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز کے جمعرات کومنظورکردہ ایک نئے فرمان کے تحت پانچ ممتازمقیم شخصیات کو سعودی عرب کی شہریت دی گئی ہے۔

الشرق الاوسط کی رپورٹ کے مطابق ان میں معروف ماہرین تعلیم اورمختلف فنون کے عالمی شہرت کی حامل شخصیات شامل ہیں۔وہ برسوں سے سعودی عرب میں مقیم ہیں اور سعودی عرب کی تہذیب ومعاشرت کی ترقی میں نمایاں کردارادا کررہے ہیں۔

ڈاکٹر امین سدو

Dr. Amin Sido
Dr. Amin Sido

ڈاکٹرامین سدونے سعودی عرب کی ثقافت اور ادب کو دستاویزی شکل دینے کے لیے 30 سے زیادہ کتب تصنیف وتالیف کی ہیں۔

انھوں نے الریاض میں شاہ فہد نیشنل لائبریری میں کام کیا ہے جہاں وہ اس کے میگزین کے مدیراعلیٰ تھے۔

ڈاکٹرمحمدالباقی

Dr. Muhammad al-Baqi
Dr. Muhammad al-Baqi

ڈاکٹرمحمدالباقی ایک محقق اور مترجم ہیں۔ان کی 40 سے زیادہ کتب شائع ہوچکی ہیں۔ان کے مطالعے اور کام کا اہم شعبہ ترجمہ ہے۔

انھوں نے الریاض کی شاہ سعود یونیورسٹی سمیت متعدد تعلیمی اداروں میں لسانی مطالعات کے پروفیسرکے طور پرخدمات انجام دی ہیں۔اس وقت وہ جزیرہ نماعرب کی تاریخ کے مطالعے کے لیے شاہ سلمان سینٹرمیں کام کرتے ہیں۔

2018ء میں انھیں شاہ عبداللہ بن عبدالعزیزبین الاقوامی انعام برائے ترجمہ سے نوازا گیا تھا۔

ڈاکٹرعبدالکریم السماک

Dr. Abdul Karim al-Sammak
Dr. Abdul Karim al-Sammak

ڈاکٹرعبدالکریم السماک مؤرخ اور محقق ہیں۔ان کی سعودی ریاست کے قیام پرمتعدد تصانیف شائع ہوچکی ہیں۔

ان کی تصانیف ان عربوں پرمرکوزہیں جوسعودی عرب کے بانی شاہ عبدالعزیز کے معاصرین تھے اوران کے ساتھ کام کیا تھا۔

سائمن انی

Simon Ani
Simon Ani

عراق سے تعلق رکھنے والے سائمن انی نے سعودی عرب کے اولین معروف سعودی ڈراموں میں سے ایک کی ہدایت کاری کی تھی۔اس ڈرامے کا نام ’’دا ٹرین آف فارچون‘‘(قسمت کی ٹرین)ہے۔

انھوں نے بغداد میں تھیٹر کی تعلیم حاصل کرنے کے بعد 1970ء کی دہائی میں مملکت میں ڈراموں کی ہدایت کاری شروع کی تھی۔

مختارعالم

مختارعالم ایک مشہور خطاط ہیں۔انھوں نے مکہ مکرمہ مسجدالحرام اور کعبۃ اللہ کے غلاف پرخطاطی کا کام کیا ہے۔

وہ بین الاقوامی سطح پر اور مکہ مکرمہ کی اُم القریٰ یونیورسٹی میں خطاطی کی تعلیم دی ہے۔ان کے خطاطی کے فن پاروں کی متعدد سرکاری اداروں میں نمائش کی جاچکی ہے۔

شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود نے دو روز پہلے’’منفردمہارت اور تخصص کے حامل متعدد ممتازافراد‘‘کوسعودی شہریت دینے کی منظوری دے دی ہے۔

سعودی پریس ایجنسی کے مطابق یہ منظوری’’شاہی حکم کی روشنی میں سامنے آئی ہے تاکہ قانون، طب، سائنس، ثقافت، کھیلوں اورتکنیکی شعبوں کے ماہرین کوشہریت دینے کا دروازہ اس طرح کھولاجاسکے کہ جو ملکی ترقی کے پہیّے کومہمیز دینے میں معاون ہو اورملک کے لیے مختلف شعبوں میں سودمند ثابت ہو۔‘‘

ایجنسی نے مزید کہا کہ ممتاز افراد کو شہریت دینے کا اقدام سعودی عرب کے وژن 2030ء کے عین مطابق ہے۔اس کا مقصد مختلف شعبوں کے ماہرین اورممتازافراد کےسعودی عرب میں قیام کےماحول کو مضبوط بنانا ہے تاکہ انھیں مملکت میں آنے کے لیے راغب کیا جاسکے اور ان میں سرمایہ کاری کی حوصلہ افزائی کی جاسکے۔