.

روس کو کسی بھی مہم جوئی کی بھاری قیمت ادا کرنا پڑ سکتی ہے: بورس جانسن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن نے بدھ کو کہا ہے کہ خطے میں بڑھتی ہوئی کشیدگی کے جلو میں روس کی یوکرین اور پولینڈ کی سرحدوں پر "فوجی مہم جوئی" ایک "المناک غلطی" ہو سکتی ہے۔

جانسن نے روس کو خبردار کیا کہ ماسکو کو کسی بھی فوجی مہم جوئی کی بھاری قیمت ادا کرنی پڑتی ہے۔

بورس جانسن نے برطانوی ممبران پارلیمنٹ کی ایک کمیٹی کو بتایا کہ ہمیں کیا کرنا ہے۔ ہمیں اس بات کو یقینی بنانا ہے کہ ہر کوئی سمجھے کہ پولینڈ اور یوکرین دونوں کی سرحدوں پر غلطی کی قیمت بہت زیادہ ہو سکتی ہے۔

المناک غلطی

انہوں نے مزید کہا کہ ’’میرے خیال میں کریملن کے لیے یہ سوچنا کہ فوجی مہم جوئی کے ذریعے فائدہ اٹھایا جا سکتا ہے ایک المناک غلطی ہو گی۔"

پارلیمانی مانیٹرنگ کمیٹی کے ساتھ سماعت کے دوران جانسن کا تبصرہ یوکرین کی سرحد پر روسی افواج کی فوجی نقل و حرکت کے بارے میں بڑھتے ہوئے مغربی خدشات کے دوران سامنے آیا۔

تارکین وطن کا بحران پیدا کرنا

ماسکو پر الزام ہے کہ اس نے ایک سکیم کی حمایت کی جس کا مقصد تارکین وطن کے لیے بحران پیدا کرنا تھا۔ ان مہاجرین میں سے زیادہ تر کا تعلق مشرق وسطیٰ سے ہے۔ روس ایک منصوبے کے تحت ان کے لیے بیلاروس سے پولینڈ جانے کا راستہ کھولنا چاہتا ہے۔

قابل ذکر ہے کہ سرحد کے دونوں جانب ہزاروں فوجیوں کو تعینات کیا گیا تھا، بعد ازاں بیلاروس نے روسی چھاتہ برداروں کے ساتھ مشترکہ فوجی مشقیں کیں۔