.

مغرب بحیرۂ اسودمیں فوجی مشقوں کے ذریعے یوکرین تنازع کوبڑھاوا دے رہا ہے: پوتین

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

روسی صدرولادی میرپوتین نے مغرب پر بحیرۂ اسود میں فوجی مشقوں کے ذریعے یوکرین تنازع کو بڑھاوادینے کا الزام عاید کیا ہے اور کہا ہے کہ مغربی ممالک اپنے لڑاکا بمبار روس کے سرحدی علاقے میں اڑا رہے ہیں جبکہ امریکا نے روس پریوکرین کی سرحد کے نزدیک فوج جمع کرنے کاالزام عاید کیا ہے۔

صدر پوتین نے جمعرات کو وزارت خارجہ میں ایک تقریر میں کہا کہ’’ہمارے مغربی شراکت دار کیف (یوکرین) کو جدید مگرمہلک ہتھیار مہیا کرکے کشیدگی کو بڑھاوا دے رہے ہیں۔اس کے علاوہ وہ بحیرہ اسود میں اشتعال انگیز فوجی مشقیں بھی کررہے ہیں‘‘۔

انھوں نے یہ دعویٰ بھی کیا ہے کہ ’’مغربی بمبار ہماری سرحد سے صرف بیس کلومیٹر دورفضا میں اڑ رہے ہیں ۔‘‘

قبل ازیں بدھ کو امریکی وزیردفاع لائیڈ آسٹن نے کہا تھا کہ روس مشرقی یوکرین کی سرحد کے نزدیک فوجی کمک بھیج رہا ہے۔پینٹاگان نے اس پیش رفت کی جانب اپنی توجہ مرکوز کی ہے۔انھوں نے یہ بھی کہا کہ ’’روسیوں کو اپنے اعمال میں زیادہ شفاف ہونا چاہیے۔‘‘