.

یواے ای،اسرائیل بغیرآدمی فوجی اورتجارتی جہازوں کےمشترکہ طور پرڈیزائن تیارکریں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات کے سرکاری دفاعی گروپ ایج اور اسرائیل کی سرکاری ایرواسپیس فرم آئی اے آئی کے درمیان ایک معاہدہ طے پایا ہے۔دونوں نے جمعرات کو بغیرانسان کے چلنے والے فوجی اور تجارتی جہازوں کو مشترکہ طور پرڈیزائن کرنے کے معاہدے پر دست خط کیے ہیں۔

دونوں اداروں کی جانب سے جاری کردہ ایک مشترکہ بیان میں کہاگیا ہے کہ ’’17ایم‘‘بغیرآدمی سمندر کی سطح پرچلنے والے جہازسکیورٹی کارروائیوں ،سمندری سرنگوں کا سراغ لگانے،نگرانی اوردوسری صلاحیتوں کے حامل ہوں گے۔‘‘

بیان میں کہا گیا ہے کہ جدید سینسرز، سونارز اور امیجنگ سسٹمز سے لیس جہازایک متحدہ کمان اورکنٹرول سسٹم سے مربوط ہوگا۔ یوایس وی دوردراز، نیم خودمختاری یا خود کارطریقے سے کام کرسکتا ہےاور اس میں انسانی مداخلت کی ضرورت نہیں ہوتی ہے۔

ایج گروپ کے چیف ایگزیکٹو آفیسر(سی ای او) اور منیجنگ ڈائریکٹر فیصل البنائی نے کہا:’’ایج کے لیے یہ ایک اہم سنگ میل ہے کہ وہ اپنے جدید ٹیکنالوجی پورٹ فولیوکو مضبوط بنارہا ہے اور اس مقصد کے لیے آئی اے آئی جیسے سرکردہ دفاعی اداروں کے ساتھ اشتراک قائم کررہا ہے۔‘‘

انھوں نے مزیدکہا:’’اس تزویراتی اتحاد کے ذریعے ہم بہترین خودمختارآپریشنل حل کو یقینی بنا سکتے ہیں جو انسانی زندگی کولاحق خطرات کوکم سے کم کریں، مختلف صنعتوں کے لیے اہم چیلنجوں سے نمٹیں اور سب کے محفوظ مستقبل کوممکن بنائیں۔ یہ پیش رفت مقامی اور عالمی منڈیوں، فوجی اور تجارتی شعبوں میں یکساں طورپرہمارے لیے بہت سے دروازے کھول دے گی۔‘‘

یادرہے کہ متحدہ عرب امارات اوراسرائیل کے درمیان گذشتہ سال امریکا کی ثالثی میں امن معاہدہ طے پایا تھا۔اس کے تحت دونوں نے سفارتی تعلقات قائم کیے تھے اور اب تک ان کے درمیان مختلف شعبوں میں دوطرفہ تعاون کے فروغ کے لیے متعدد سمجھوتے طے پاچکے ہیں۔