شام :دیرالزور میں بس پر بم حملے میں 10 تیل مزدورہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

شام کے مشرقی صوبہ دیرالزور میں واقع دیہی علاقے میں ایک بس پرحملے کے نتیجے میں کم سے کم 10 تیل کارکن ہلاک ہوگئے ہیں۔

شام کی سرکاری خبررساں ایجنسی سانا کے مطابق، ’’الخریطہ آئل فیلڈ میں دس کارکن شہید ہو گئے ہیں اور ایک اور زخمی ہو گیا ہے۔‘‘

فوری طور پر کسی نے اس حملے کی ذمے داری قبول نہیں کی ہےلیکن دہشت گرد گروپ داعش نے تیل کی دولت سے مالامال اس صوبے میں متعدد حملوں کی ذمے داری قبول کرنے کے دعوے کیے ہیں۔دیرالزورگذشتہ چندبرسوں کے دوران میں داعش کی شام اورعراق میں پھیلی ہوئی اس کی وسیع وعریض ’پروٹو ریاست‘ میں شامل تھا۔

برطانیہ میں قائم شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق نے کہا ہےکہ’’دیرالزور کے ایک علاقے میں بس پر حملے کے لیے دھماکاخیزآلہ استعمال کیا گیا ہے اوراس علاقے میں داعش کے سلیپرسیل سرگرم ہیں‘‘۔

رصدگاہ نے مزید بتایا ہے کہ الخریطہ آئل فیلڈ دیرالزورشہر سے 20 کلومیٹر(12 میل) جنوب مغرب میں واقع ہے۔

واضح رہے کہ شامی فوج نے 2017ء میں داعش کے جنگجوؤں کو اس علاقے سے بے دخل کردیا تھا اور اس پر دوبارہ قبضہ کر لیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں