سعودی ٹیلی کام کمپنی 3.2 ارب ڈالرمالیت کے حصص کے ساتھ تداول میں دوسرے نمبر پر!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے پبلک انویسٹمنٹ فنڈ (پی آئی ایف) نے سعودی ٹیلی کام کمپنی (ایس ٹی سی) کے حصص کے سرمائے کا چھے فی صد 3.2 ارب ڈالر میں فروخت کردیا ہے۔اس طرح سعودی ٹیلی کام دسمبر2019 میں دنیا کی بڑی تیل کمپنی آرامکوکے ابتدائی حصص کی فروخت کے بعد تداول ایکس چینج میں اب تک دوسری بڑی کمپنی بن گئی ہے۔

ٹیلی کام گروپ کی ثانوی عوامی پیش کش میں خوردہ اور ادارہ جاتی سرمایہ کاروں نے زیادہ دلچسپی ظاہر کی تھی اور منگل کو اس کا اعلان کیا گیا تھا۔سعودی پی آئی ایف اس کمپنی میں 64 صد حصص کے ساتھ اکثریتی حصص دار ہے۔

اس کے 12 کروڑ حصص کی فروخت بھی تداول مارکیٹ میں پہلی ثانوی عوامی پیش کش تھی۔یہ گذشتہ تین سال میں یورپ، مشرق اوسط اورافریقا میں ثانوی سطح پرحصص کی ایک بڑی منتقلی ہے۔

پی آئی ایف کے ڈپٹی گورنراور مینا انویسٹمنٹس کے سربراہ یزید الحمید نے کہا کہ اس پیش کش نے ملکی اور بین الاقوامی سرمایہ کاروں میں گہری دلچسپی پیدا کی ہے اور یہ ایس ٹی سی کی پائیدارمعاشی طاقت اور مستقبل میں شاندار امکانات کا ثبوت ہے۔

ٹیلی مواصلاتی کمپنی کے حصص کی یہ فروخت اکتوبر میں اے سی ڈبلیو اے پاور کی لسٹنگ کے بعد کی گئی ہے۔اُس کا آغاز 1.2 ارب ڈالر سے ہوا تھا۔

سعودی آرامکو نے2019ء میں اپنے ابتدائی حصص اسٹاک مارکیٹ میں فروخت کے لیے پیش کیے تھے۔اس نے کسی بھی کمپنی کا بڑی تعداد میں مہنگے حصص کی فروخت کا بین الاقوامی ریکارڈ توڑ دیا تھا اور اس نے اسٹاک مارکیٹ میں حصص کی فروخت سے 29.4 ارب ڈالر جمع کیے تھے۔

سعودی اسٹاک مارکیٹ کے مالک سعودی تداول گروپ نے 8 دسمبرکواپنے حصص فروخت کے لیے پیش کیے تھے۔اس سے اس نے ایک ارب ڈالر تک اکٹھے کیے تھے۔

سعودی تداول گروپ کے چیف ایگزیکٹو آفیسر (سی ای او) خالدالحسن کا کہنا ہے کہ ’’پی آئی ایف کی ثانوی پیش کش کا صحت مند خیرمقدم سعودی کیپیٹل مارکیٹ کی پختگی کو اجاگرکرتا ہے۔اس میں مثبت ریگولیٹری اوراقتصادی پالیسیوں کی بدولت گہرائی، لچک اور مضبوطی پرزور دیا گیا ہے‘‘۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں